بھارت میں کورونا کے وار، دہلی کا ملٹری اسپتال بھرگیا،آکسیجن کی قلت

بھارت میں کورونا کے وار، دہلی کا ملٹری اسپتال بھرگیا

بھارت کورونا کا گھر بن گیا، ایک دن میں ریکارڈ سینتیس سو اموات اور تین لاکھ بیاسی ہزار کیسز رپورٹ ہوئے، کورونا کے متاثرین کی تعداد اب دو کروڑ سے تجاوز کرگئی ، یومیہ اموات اور کیسز میں مسلسل اضافہ ہورہاہے، صحت کانظام تباہ ہوچکا ہے۔

مہاراشٹر، کرناٹک، دہلی سمیت مختلف ریاستوں میں صورتحال بدترین ہے، دہلی حکومت کی جانب سے دہلی کنٹونمنٹ ملٹری اسپتال میں آکسیجن کی ‏قلت کے باعث فوجیوں کی جانیں خطرے میں ہیں۔

اسپتال کے لیے مختص آکسیجن کوٹہ میں کمی کر دی گئی جس پر فوج نے وزارت دفاع، ‏انتظامیہ اور متعلقہ اداروں سے رابطہ کیا اور شہروں سے آکسیجن سلینڈرز کی خریداری شروع کر ‏دی۔

بھارتی فوج میں روز 200 جوان کورونا کا شکار ہونے لگے اور 650 بستر پر مشتمل آرمی اسپتال میں بیڈز بھرچکے ہیں، دہلی کے نائب وزیر اعلیٰ نے مرکزی حکومت سے ملٹری بیس کی ضروریات پوری کرنے کے لیے ‏فوری طور پر 10 ہزار آکسیجن بیڈز اور 1 ہزار آئی سی یو سہولیات فراہم کرنے کی درخواست کی ‏ہے۔

دہلی میں 19 ہزار سے زیادہ افراد میں کورونا وائرس کی تشخیص ہوئی اور 338 افراد ہلاک بھی ہوئے،ویکسینیشن کا عمل بھی سست روی کا شکار ہے اور صرف ساڑھے 11 لاکھ افراد کو گذشتہ روز ویکسین لگائی گئی تھی۔

دوسری جانب بالی ووڈ اداکارہ پیا باجپائی کی اپیل کے باوجود کورونا میں مبتلا بھائی وینٹی لیٹر بیڈ نہ ملنے پر زندگی کی بازی ہار گیا،اداکارہ نے ٹوئٹر پر اپیل کی تھی کہ اترپردیش کے ضلع فرخ آباد میں کورونا میں مبتلا بھائی کے لیے وینٹی لیٹر بیڈ کی ضرورت ہے۔

بھارت میں کورونا سے صورتحال انتہائی سنگین ہے، شمشان گھاٹ بھرچکے ہیں، قبرستان میں بھ ی جگہ نہیں ہے، نہ ادویات ہے نہ آکسیجن سلنڈر، شہری در بدر بھٹک رہے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>