کیا پاکستان میں کرونا کیسز میں کمی آنا شروع ہوگئی ہے؟

کیا لاک ڈاؤن اور حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے کرونا کیسز میں کمی آنا شروع ہوگئی ہے؟

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں مزید 2 ہزار 869 مثبت کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ 104 افراد جان سے ہاتھ دھوبیٹھے ہیں۔

کورونا کے مصدقہ مریضوں کی تعداد 867,438 ہوگئی جبکہ اس وقت ملک بھر میں کورونا کے فعال مریضوں کی تعداد76 ہزار 536 ہے۔ کرونا وبا سے جاں بحق ہونے والے افراد کی تعداد مجموعی طور پر 19 ہزار 210 ہوگئی ہے۔

این سی او سی کے مطابق ق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 38 ہزار 616 کورونا ٹیسٹ کئے گئے جبکہ کرونا کے مثبت کیسز کی شرح 7.42 فیصد ہے۔

سرکاری ڈیٹا کے مطابق کرونا کے مثبت کیسز کی شرح میں کمی آنا شروع ہوگئی ہے۔ 10 مئی کو مثبت کیسز کی شرح 9.12 فیصد تھی جبکہ اپریل 30 کو مثبت کیسز کی شرح 10.41فیصد تھی۔ اس طرح گزشتہ 12 دنوں میں کرونا کیسز کی شرح میں3 فیصد کمی دیکھنے میں آئی ہے۔

کرونا کے مثبت کیسز میں کمی سب سے زیادہ خیبرپختونخوا میں ریکارڈ کی گئی جس کی وجہ خیبرپختونخوا حکومت کا سخت لاک ڈاؤن اور ایس او پیز پر عملدرآمد ہے۔مئی کے پہلے 11 دنوں میں 6 ہزار 979 نئے کیسز رپورٹ ہوئے اور اموات کی تعداد میں بھی کچھ حد تک کمی آئی۔

صوبے کے پانچ اضلاع ایسے بھی ہے جہاں اب تک کورونا وائرس سے کوئی موت نہیں ہوئی ، ان اضلاع میں ٹانک، تور غر، اپر کوہستان، لوئر کوہسپتان، اور کولی پالس شامل ہیں ، جبکہ سب سے کم مثبت کیسز بھی ان ہی اضلاع سے رپورٹ ہوئے ہیں، کولی پاس سے 66, لوئر کوہسپتال سے 149, تور غر سے 210 کیسز اب تک رپورٹ ہوچکی ہے۔

اپریل کا مہینہ خیبرپختونخوا میں انتہائی جان لیوا اور مہلک ثابت ہوا لیکن مئی کے آغاز پر کرونا کیسز میں کمی آنا شروع ہوگئی ۔ماہ اپریل میں خیبرپختونخوا میں 30 ہزار 314 افراد کورونا وائرس سے متاثر ہوئے تھے یعنی روزانہ ایک ہزار سے زائد افراد میں وائرس کی تصدیق ہوئی جبکہ 947 افراد کورونا کی وجہ سے زندگی کی بازی ہار گئے تھے۔

جس کے بعد خیبرپختونخوا حکومت اور این سی او سی نے خیبرپختونخوا کے مختلف شہروں میں لاک ڈاؤن کا فیصلہ کیا اور اسکا آغاز مردان سےکیا گیا اور بعدازاں دوسرے شہروں میں بھی لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا۔

پنجاب میں بھی کرونا کیسز میں کسی حد تک کمی دیکھنے میں آئی ہے ۔ گذشتہ 24 گھنٹوں میں مزید 63 افراد جان کی بازی ہار گئے جبکہ 1266 نئے کیسز سامنے آئے۔

لاہور میں اگرچہ کرونا کے مثبت کیسز میں کمی دیکھنے میں آئی ہے لیکن اسکے باوجود صورتحال تشویشناک ہے لیکن توقع کی جارہی ہے کہ آئندہ چند روز میں لاہور سے بھی کرونا کیسز کی شرح کم ہونا شروع ہوجائے گی۔

گزشتہ کئی روز سے عوام کو کرونا ایس او پیز کی پابندیاں کرتے ہوئے دیکھا جارہا ہے۔ دکانوں پر بھی ماسک پہننے کے پوسٹرز اور بورڈ آویزاں ہیں۔

کچھ روز قبل وفاقی وزیر اسد عمر نے کہا تھا کہ کرونا کیسز کی شرح میں کمی سے ہسپتالوں پردباؤ کم ہوا ہے اور مریضوں کیلئے ونٹی لیٹرز ، آکسیجن کی قلت نہیں ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>