بھارت میں کورونا مریضوں پر حملہ کرنے والےمہلک بلیک فنگس کی پاکستان میں تشخیص

بھارت میں کورونا مریضوں پر حملہ کرنے والےمہلک بلیک فنگس کی پاکستان میں تشخیص

کراچی میں کرونا مریضوں میں مہلک بلیک فنگس کی تشخیص کا انکشاف۔

تفصیلات کے مطابق اس فنگس سے اب تک چار افراد جاں بحق ہوچکے ہیں۔جبکہ متعدد کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔ کراچی کے تین اسپتالوں میں ایسے کیسز کے مریض سامنے آئے ہیں۔ یہ فنگس دماغ اور پھیپھڑوں پر اثرانداز ہوتا ہے۔ ماہرین کے مطابق متعدد سینٹرز کی جانب سےبلیک فنگس کے یہ کیسز رپورٹ نہیں کئے گئے کیونکہ مریضوں میں اس مہلک فنگس انفیکشن کی تشخیص بہت مشکل سے ہوتی ہے۔

چھوت کی بیماریوں کے ماہرین نے کہا کہ بلیک فنگس دماغ اور پھیپھڑوں پر اثرانداز ہوتا ہے۔ یہ وہی فنگس ہے جو روزمرہ کی زندگی میں روٹیوں کو لگتا ہے۔فنگس کی علامات میں آنکھوں اور ناک کے گرد تکلیف اور سانس لینے میں مشکلات،خون کی کی الٹی اور ذہنی حالت میں تبدیلیاں رونما ہونا شامل ہیں۔

ماہرین کے مطابق کرونا سے صحت یاب ہونے والے مریضوں میں میکورمائکوسس نام کی ایک بیماری رونما ہو رہی ہے۔ اس بیماری میں عموماً مریضوں کے پھیپھڑے،،سائنیس، جبڑے یا ناک کی ہڈی متاثر ہوتے ہیں۔ اگر آنکھوں میں انفیکشن ہوجائے تو اس کی وجہ سے لوگوں کی بینائی ختم ہو جاتی ہے جبکہ یہ انفیکشن دماغ میں پھیل سکتا ہے جس سے دوروں، کوما جیسی دشواریوں کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

واضح رہے کہ بھارت میں کورونا وائرس کے مریضوں میں بلیک فنگس عام ہونے لگا ہے بھارت کے مہارشڑا میں 2 ہزار سے زائد کورونا مریضوں میں بلیک فنگس پایا گیا ہے جبکہ انڈین کونسل آف میڈیکل ریسرچ نے کورونا مریضوں میں میوکورمائیکوسس نامی اس بیماری کا انکشاف کیا ہے جو کہ بلیک فنگس انفیکشن کے نام سے بھی جانا جاتا ہے اور اس بیماری سے نتھنوں یا پھیپھڑوں کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>