بھارتی ڈیلٹا ویریئنٹ کے کیسز میں اضافہ،سندھ حکومت نے دوبارہ پابندیاں نافذکر دیں

بھارتی ڈیلٹا ویریئنٹ کے کیسز میں اضافہ،سندھ حکومت نے دوبارہ پابندیاں نافذکر دیں

سندھ میں کورونا کیسز میں اضافے کے باعث پابندیاں نافذ کر دی گئیں، شادی ہالز، تعلیمی ادارے، ہوٹلز میں انڈور اور آؤٹ ڈور ڈائننگ بند کر دی گئی۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی زیر صدارت کورونا وائرس کی بگڑتی ہوئی صورتحال سے متعلق صوبائی ٹاسک فورس کا اجلاس ہوا جس میں صوبے بھر میں دوبارہ پابندیاں عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔

کورونا ٹاسک فورس کے اجلاس میں پیر سے شادی ہال اور دیگر تقریبات پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا گیا جبکہ تمام مارکیٹیں ہفتے میں دو دن، جمعہ اور اتوار کے روز بند رکھی جائیں گی، تاہم شاپنگ مالز، مارکیٹ صبح 6 بجے سے شام 6 بجے تک کھلے رہیں گے۔

ترجمان وزیراعلیٰ سندھ کے مطابق اجلاس میں مزید فیصلہ کیا گیا کہ کریانہ، بیکری اور فارمیسی کھلی رہیں گی، صوبے بھر میں تمام درگاہیں بھی بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اجلاس میں تعلیمی ادارے بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا تاہم امتحانات اپنے شیڈول کے مطابق ہوں گے۔

کورونا صورتحال کے پیش نظر تمام ریسٹورنٹس میں انڈور اور آؤٹ ڈور ڈائننگ بند ریے گی جبکہ صرف ٹیک اووے کی اجازت ہوگی۔ اجلاس میں دفاتر سے متعلق بھی فیصلہ کیا گیا جس کے مطابق سرکاری اور نجی سیکٹر میں 50 فیصد اسٹاف حاضری کی اجازت ہوگی۔ ترجمان وزیراعلیٰ کا مزید کہنا تھا کہ تمام فیصلوں پر پیر سے عملدرآمد کرایا جائے گا۔

دوسری جانب صوبے بھر کے تاجروں نے سندھ حکومت کی جانب سے کاروبار کی بندش سے متعلق فیصلے کو مسترد کردیا ہے۔

کاروباری بندش کے حوالے سے بات کرتے ہوئے آل پاکستان انجمن تاجران سندھ کے رہنما جاوید قریشی نے کہا ہے کہ کاروبار کی بندش کے سندھ حکومت کے فیصلےکو مسترد کرتے ہیں، 17 ماہ کی طویل کاروباری بندش کی وجہ سےمشکل حالات میں ہیں۔

واضح رہے کہ کراچی میں کورونا کی نئی قسم ڈیلٹا ویرینٹ تیزی سے پھیلنے لگا، 90 تصدیق شدہ کورونا کیسز میں سے 83 مریضوں میں کورونا کی بھارتی قسم کی تصدیق ہوئی ہے۔

کورونا کے بڑھتے ہوئے کیسز سے نمٹنے کے لئے حکام نے کراچی کے بڑے اسپتالوں میں زیادہ بستر ، وارڈ اور انسانی وسائل کو بڑھانے کے اقدامات شروع کر دیئے ہیں۔

صوبائی محکمہ صحت کے مطابق سول ہسپتال کراچی (سی ایچ کے) میں 48 بستروں پر مشتمل سرجیکل وارڈ کو کورونا وارڈ میں تبدیل کر دیا گیا ہے جبکہ ڈیلٹا ویرینٹ کے بڑھتے ہوئے کیسز سے نمٹنے کے لئے جناح پوسٹ گریجویٹ میڈیکل سنٹر کے پلمونولوجی وارڈ کو بھی اسٹینڈ بائی پر رکھا ہوا ہے۔

اس سے قبل حکام کی جانب سے عوام کو خبردار کیا گیا ہے کہ ڈيلٹا ویرینٹ کی وجہ سے جتنے زیادہ کیس بڑھیں گے اتنی ہی زیادہ اموات کا خدشہ ہے اور اس کے پھیلاو کو روکنے کے لئے مناسب اقدامات نہ کئے گئے تو عیدالاضحیٰ کے بعد صورتحال تشویشناک حد تک خراب ہونے کا امکان ہے۔

گزشتہ کئی روز سے ملک میں کورونا کی بھارتی قسم کے کیسز کی تصدیق ہورہی ہے جس کے بعد مریضوں میں اضافے کی وجہ سے اسپتالوں پر بھی دباؤ بڑھنے لگا ہے، اس صورتحال کو ملک میں مہلک وائرس کی چوتھی لہر کا آغاز قرار دیا جارہا ہے جو نہایت تیزی سے پھیل رہی ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>