دہشت گردوں کا حملہ،انسداد دہشت گردی عدالت کے جج اہلیہ، بیٹی اور نواسے کے ہمراہ شہید

پشاور میں نامعلوم افراد نے انسداد دہشت گردی عدالت کے  جج کی گاڑی پر فائرنگ کردی جس سے جسٹس آفتاب آفریدی اپنی اہلیہ، بیٹی اور کم سن نواسے کے ہمراہ جاں بحق ہوگئے ہیں۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق افسوس ناک واقعہ پشاور موٹروے پر صوابی انٹرچینج  ،دریائے سندھ پل  کے قریب پیش آیا، جسٹس آفتاب آفریدی اپنی فیملی کے ہمراہ سوات سے واپس اسلام آباد جارہے تھے کہ نامعلوم ملزمان نے ان کی گاڑی پر فائرنگ کردی۔

اچانک ہونے والی فائرنگ نے جسٹس آفتاب کو سنبھلنے کا موقع بھی نہیں دیا اور جسٹس آفتاب، اہلیہ بی بی زینب، صاحبزادی کرن اور  3 سالہ نواسے کے ہمراہ شہید ہوگئے ، جبکہ ڈرائیور اور گارڈ شدید زخمی ہوگئے ہیں۔

واقعے کے فوری بعد پولیس افسران جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور  بھاری نفری کی مدد سے ملزمان کی تلاش کیلئے سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔

ڈی پی او صوابی محمد شعیب نے واقعے میں  2 پولیس اہلکار اور  ایک گارڈ کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے، ان کا کہنا تھا کہ جسٹس آفتاب کو نشانہ بنانے والے ملزمان  گاڑی میں سوار تھے۔

واقعے سے متعلق گورنر خیبرپختونخوا  شاہ فرمان اور وزیراعلی  محمود خان نے گہرے رنج و  غم کا اظہار کیا ہے اور ملزمان کی گرفتاری کیلئے پولیس کو جلد از جلد کارروائی کرنے کے احکامات جاری کردیئے ہیں۔

  • کاش یہ قاسم اور فائیز عیسی جیسے کرپٹ اور حرام خوروں کے ساتھ بھی ایسا ہی ہو تاکہ لوگوں کو ان حرامُخوروں اور انکے کرپٹ لعنتیُ ٹبر وں سے نجات ملے یہ جج بیچارہ تو حلالی خون تھافائز عیسیُاست قاسم فراڈئے کے کرتوت سب کے سامنے ہیںُ

  • إِنَّا لِلَّٰهِ وَإِنَّا إِلَيْهِ رَاجِعُونَ‎
    الله پاک مرحوم کو جنت الفردوس ميں اعلی مقام عطا فرمائے اور لواحقین کو صبر جمیل عطا فرمائے امین


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >