ہنجروال سے لاپتہ ہونے والی چاروں بچیوں کی بازیابی کے بعد اندرونی کہانی سامنے آ گئی

ہنجروال سے لاپتہ ہونے والی چاروں بچیوں کی بازیابی کے بعد اندرونی کہانی سامنے آ گئی

لاہور کے علاقے ہنجروال سے لاپتہ ہونے والی چاروں بچیوں کو پولیس نے بازیاب کرایا تو کچھ اور ہی کہانی سامنے آ گئی۔ پولیس کے مطابق یہ بچیاں کنزہ، انعم، ثمرین اور عائشہ اپنی مرضی سے گھر سے گئیں جن کا مقصد بہت سارا پیسہ کمانا اور اپنے خواب پورے کرنا تھا۔

پولیس کے مطابق  کنزہ اور انعم اپنے باپ کے ساتھ رہتی تھیں یہ دونوں آپس میں سوتیلی بہنیں تھیں جن کا باپ اپنی دونوں بیویوں کو طلاق دے چکا ہے۔ ان دونوں بچیوں نے باپ کی نشے کی لت سے تنگ آ کر اپنا گھر چھوڑنے کا منصوبہ بنایا اور ساتھ میں پڑوسن عائشہ اور ثمرین کو بھی ملا لیا۔

حالات سے دلبرداشتہ گھر سے بھاگنے والی یہ بچیاں ہنجروال سے اورنج ٹرین میں بیٹھ کر گلشن راوی پہنچیں جہاں عائشہ نے اپنے محلے دار دوست عمر کو فون کر کے بلایا۔ عمر جب گلشن راوی پہنچا تو اس نے معاملے کی نوعیت کو بھانپ کر وہاں نے نکلنے کی ٹھانی اور واپس آکر ان بچیوں کے والدین کو اطلاع دی کہ ان کی بچیاں بھاگ گئی ہیں۔

اسی اثنا میں یہ چاروں بچیاں ارسلان نامی رکشہ ڈرائیور کو مل گئیں جس نے انہیں 3،4 گھنٹے لاہور میں گھمایا اور پھر قائد اعظم انڈسٹریل اسٹیٹ لیجا کر انہیں رکشے سے اتار دیا۔ یہاں سے یہ ایک اور رکشہ ڈرائیور کے ہتھے چڑھیں جو پہلے انہیں اپنے گھر گرین ٹاؤن لے گیا اور پھر انہیں ساہیوال کیلئے تیار کیا۔

ساہیوال جاتے ہوئے یہ رکشہ ڈرائیور اس کا دوست اور دونوں کی بیویاں بھی ان کے ساتھ تھیں۔ یہ گروہ بچیوں کو ساہیوال لیجا کر جسم فروشی کے اڈے پر بیچنا چاہتا تھا مگر انہیں اس کارروائی سے پہلے پہلے گرفتار کر لیا گیا۔ اب پولیس نے پہلے رکشہ ڈرائیور ارسلان، اس کے ساتھی ارشد کو گرفتار کر رکھا ہے۔ جن کے علاوہ دوسرے گروہ میں شامل دونوں مرد (رکشہ ڈرائیور) اور ان کی بیویوں کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ بچیوں کا میڈیکل کروانے کے بعد ان کا بیان لینے کے لیے لاہور لایا جائے گا اور قانونی کارروائی مکمل کر کے انہیں والدین کے حوالے کیا جائے گا۔

  • lahore aor shaiwal meyn itna fasla hey ki online beyan leyna bhi mushkil ho giya hey aor journalist bhi bachiyon key lahore laye janey ka intizar ker reha hey aor to aor sahiwal key sarey journalist bhag gaye heyn-


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >