کرونا وائرس سے بچنے کے 3 آزمودہ طریقے اور تازہ ترین اعداد و شمار

کرونا وائرس سے بچنے کے 3 آزمودہ طریقے اور تازہ ترین اعداد و شمار

کہتے ہیں، "جو ڈر گیا، وہ مر گیا”۔ یہ ضرب المثل شاید ہی کسی دور میں اتنی صادر آئی ہو، جتنی آج، اس آزمائش کی گھڑی میں آتی ہے، جب پوری دنیا کی سائنس اور ٹیکنالوجی دھری کی دھری رہ گئی اور دیکھتے ہی دیکھتے، چند ہفتوں کے اندر اندر ایک چھوٹے سے وائرس نے 192 ممالک کو اپنے خوف و ہراس میں جکڑ لیا۔

چونکہ یہ وائرس سب سے پہلے چین میں نمو دار ہوا، لہٰذا سب نے اس کو چین سے منسوب کرتے ہوئے "چینی وائرس” کہنا شروع کر دیا۔ امریکہ کے ایک مشہور جریدے نے تو چین کو ایشیا کا بیمار بیٹا تک کہہ ڈالا۔ پاکستان میں صحافیوں کی اکثریت نے حکومت پر دباؤ ڈالنا شروع کر دیا کہ چین میں موجود پریشان حال پاکستانی طلبا کو واپس پاکستان بلوایا جائے۔

پاکستانی حکومت نے چین کے بہترین انتظامات اور چین سے طلبا کو پاکستان بلوانے کی صورت میں وبا کے پورے ملک میں پھیل جانے کے خطرے کے پیش نظر ان صحافیوں کے دباؤ میں آ کر ان کے اس مشورے پر عمل نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

وہ فیصلہ وقت نے درست ثابت کیا لیکن قسمت کی ستم ظریفی دیکھیے، جو وائرس چین سے پاکستان نہ پہنچ سکا، وہ ایران کے راستے، پاکستان آن پہنچا۔  یقیناً ایران سے زائرین کا آنا لازمی تھا، کیونکہ ایران ان کے ویزے ختم ہونے کے بعد ان کو نہیں رکھ سکتا تھا، لیکن جس غیرذمہ دارانہ طریقے سے کئی لوگ بھاگ نکلے، اس نے حکومت کو پریشان اور پورے ملک کو خوفزدہ کر دیا۔ حکومت کہاں، کیا بہتر کر سکتی تھی، اس پر ایک مکمل کتاب لکھی جا سکتی ہے، لیکن مسئلہ یہ کہ لاہور کے مشہور قلفی بنانے والے کو یہ تو پتا ہے کہ کون سے کھلاڑی کو کیسے کھیل کر میچ جیتنا چاہیے، اگر نہیں پتا تو یہ نہیں پتا کھ اچھی قلفی بنانے کی ترکیب کیا ہے۔

وہی حال ہمارے چند انتہائی ذہین صحافیوں کا بھی ہے،صحافت کے علاوہ انہیں ہر میدان فتح کرنے کا گر آتا ہے۔ اس وقت قوم کو دلاسا دینے اور ڈھارس بندھانے والے کندھے کی پوری قوم کل مشکور ہو گی۔

کرونا وائرس سے بچنے کے 3 آزمودہ طریقے اور تازہ ترین اعداد و شمار

کرونا وائرس پر عالمی اعداد و شمار:

اس وقت پوری دنیا میں کرونا وائرس کے سب سے زیادہ مریض امریکہ میں ہیں، جس نے اسی وبا پر سب سے زیادہ چین کا تمسخر اڑایا تھا۔ عالمی اعداد و شمار کے مطابق امریکہ میں کل مریضوں کی تعداد 123,781 تھی، جن میں سے 3238 مکمل طور پر صحت یاب ہو چکے ہیں جبکہ 118,314 مریض اس وقت زیر علاج ہیں اور 2229 جان کی بازی ہار گئے۔

چین میں کرونا وائرس کے مریضوں کی کل تعداد 81,439 تھی، جن میں سے 75,448 مکمل طور پر صحت یاب ہو چکے ہیں، جبکہ 2691 اس وقت زیر علاج ہیں، 3300 مریض چل بسے۔

پاکستان کی صورتحال خوش قسمتی سے بروقت ملک بھر میں لاک ڈاؤن لاگو ہونے سے قدرے بہتر ہے۔ پاکستان میں کل مریضوں کی تعداد 1526 تھی، جن میں سے 29 صحتیاب ہو چکے ہیں، جبکہ 1484 اس وقت زیر علاج ہیں اور 13 مریض جان کی بازی ہار گئے۔

کروناوائرس کا مقابلہ کرنے کے 3 آذمودہ طریقے:

دنیا بھر سے جتنے بھی مریض اس موذی وبا کو شکست دینے میں اب تک کامیاب ہوئے ہیں، ان میں سے زیادہ تر سے جب پوچھا گیا تو انہوں نے اپنا اپنا تجربہ بیان کرتے ہوئے کچھ اہم طریقے بتاۓ، جس نے ان کی قوت مدافعت کو مضبوط کرنے میں ان کی مدد کی۔ نیز طبی ماہرین نے بھی ان 3 ہدایت کی پرزور تائید کی ہے۔

کرونا وائرس سے بچنے کے 3 آزمودہ طریقے اور تازہ ترین اعداد و شمار

• گرم پانی کی بھاپ اور کلونجی کا بھرپور استعمال:

جدید تحقیق سے ثابت ہے کہ گرم پانی کی باقاعدگی سے بھاپ لینے سے جسم کے اندر موجود ہر قسم کا نقصان آور بیکٹیریا اور وائرس دم توڑ جاتا ہے۔ عام طور پر گرم پانی کی بھاپ اور غراروں کا اہتمام صرف زکام کے علاج کی خاطر کیا جاتا ہے۔ لیکن جاپان میں یہ عام روایت ہے۔ بچوں کو عام طور پر بھی سفر کرتے وقت وہاں ماسک پہنائے جاتے ہیں۔

اور اس حوالے سے کلونجی کا استعمال بھی بہت فائدہ مند ثابت ہوا ہے۔ امریکہ اور برطانیہ میں اس وقت طبی ماہرین کلونجی (Black Seeds) ناشتے میں شامل کرنے پر زور دے رہے ہیں۔

کلونجی کا استعمال تو حدیث مبارکہ سے بھی ثابت ہے کہ اس میں موت کے سوا ہر چیز کا علاج ہے۔

کرونا وائرس سے بچنے کے 3 آزمودہ طریقے اور تازہ ترین اعداد و شمار

15 دن کے لئے گھروں کے اندر بھی مکمل لاک ڈاؤن:

کروناوائرس پر کام کرنے والے ایک ماہر سائنسدان نے حال ہی میں ایک امریکی جریدے میں بتایا کہ یہ وائرس اگر کسی جسم میں داخل ہو بھی جائے تو جب تک اسے کوئی دوسرا میزبان خلیہ نہ ملے، تو وہ وہیں جلد دم توڑ جاتا ہے۔ لہٰذا گھر کے اندر بھی ایک دوسرے سے 6 سے 8 فٹ کا فاصلہ برقرار رکھنا ضروری ہے۔

کرونا وائرس سے بچنے کے 3 آزمودہ طریقے اور تازہ ترین اعداد و شمار

منفی سوچ اور مایوسی کا شکار ہونا اتنا ہی خطرناک ہے جتنا یہ وائرس:

اسلام تو صدیوں پہلے سے کہتا آ رہا ہے، اور آج سائنس بھی اسی نتیجے پر پہنچی ہے کہ مثبت سوچ قوت مدافعت کو چٹان کی طرح مضبوط کر دیتی ہے، جب کہ منفی سوچ جسم کو کسی بھی بیماری کی خوراک بنا دیتی ہے۔ جو ڈر گیا، وہ مر گیا۔ جو ڈٹ گیا، وہ جی گیا! پاکستان زندہ باد!

اللہ‎ تعالٰی ہم سب کو اپنی حفظ و امان میں رکھیں اور واپس ہمارے ملک کی اور پوری دنیا کی رونقیں بحال کریں۔ آمین

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More