ایک اور خوشخبری: پی آئی اے اب ڈیفالٹر ادارہ نہیں رہا

ایک اور خوشخبری: پی آئی اے اب ڈیفالٹر ادارہ نہیں رہا

باکمال لوگوں کی لا جواب سروس کی مشکلات کم ہوگئیں۔۔پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے پی آئی اے کو ڈیفالٹر لسٹ سے نکال دیا

 

سالانہ جنرل میٹنگ اورآڈٹ اکاؤنٹ رپورٹ جمع نہ کروانے پر قومی ایئرلائن کو10اکتوبر 2018 کو ڈیفالٹر سیگمینٹ میں ڈالاگیا تھا ، اسٹاک ایکسچینج حکام کے مطابق کسی بھی کمپنی کودوبرس تک جنرل میٹنگ نہ کرانے پر رکنیت فوری معطل کردی جاتی ہے۔۔۔

 

پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے قومی ائیرلائن پی آئی اے کو 22 مئی 2019 سے بھی ڈیفالٹر قرار دے دیا تھا۔۔پی آئی اے کو ڈیفالٹر سالانہ جنرل میٹنگ اور سالانہ آڈٹ رپورٹ جمع نہ کرنے پر کیا گیا تھا۔۔

 

2018 میں ناقص حکمت عملی سے قومی ایئر لائن کو 67ارب32کروڑکاخسارہ ہوا تھا۔۔جو کہ 2017 کے خسارے کا 32 فیصد زائد تھا۔ پی آئی اے کو2017 میں50ارب98کروڑ کاخسارہ ہواتھا۔

 

وہ وقت جب پاکستان سٹاک ایکسچینج نے پی آئی اے کو ڈیٖفالٹر لسٹ میں ڈالا تھا

 


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >