کامیاب سفارتکاری ،پاکستان گرے لسٹ سے نکلنے کے قریب؟

پاکستان کا نام گرے لسٹ سے نکالنے یا نہ نکالنے کیلئے ایف اے ٹی ایف کا ابتدائی اجلاس پیرس میں شروع ہوگیا ہے جو 21 فروری تک جاری رہے گا۔

ایف اے ٹی ایف اجلاس میں پاکستان کا نام گرے لسٹ سے نکالنے یا برقرار رکھنے سے متعلق فیصلہ ہوگا،5 روزہ اجلاس میں پاکستانی حکام کی طرف سے اٹھائے جانیوالے اقدامات کا جائزہ لیا جائے گا۔ پاکستانی وفد میں وزارت خزانہ،سٹیٹ بینک ، ایف ایم یو کے حکام بھی شامل ہیں۔

،پاکستان نے ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان پر عملدرآمدمیں ٹھوس پیش رفت کی،پاکستان نے منی لانڈرنگ اور ٹیرر فنانسنگ کے خطرات پر قابو پایا گیا ہے ۔

پاکستان کو بلیک لسٹ میں شامل کیے جانے کا کوئی امکان نہیں، اور حافظ سعید کی سزا کے بعد ہونیوالی پیشرفت کے تناظر میں گرے لسٹ کے حوالے سے پاکستان کو مدد ملے گی ،اجلاس میں وزارت خزانہ اور اسٹیٹ بینک کے حکام بھی شریک ہوں گے۔

گرے لسٹ سے نکلنے کیلئے پاکستان کو 15 ووٹ چاہئیں ہیں ،گرے لسٹ سے نکلنے کیلئے پاکستان نے بھرپور سفارت کاری کی ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ گرے لسٹ سے نکلنے کیلئے پاکستان کو 12 ملکوں کی حمایت ملنے کی امید ہے ، چین، ترکی اور ملائیشیا پہلے ہی حمایت کر چکے ہیں۔

پاکستانی حکام کے مطابق ایکشن پلان پر ٹھوس پیشرفت کے ذریعے منی لانڈرنگ اور ٹیرر فنانسنگ کے خطرات پر قابو پایا گیا ہے،27 پوائنٹس میں سے14 پر مکمل عملدرآمد کیا جاچکا ہے اور صرف دو پوائنٹس پر عملدرآمد نہیں کیا جاسکا جبکہ باقی ماندہ11 پوائنٹس پر جزوی عملدرآمد کیا گیا ہے۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>