سویابین کے جہاز سے زہریلی گیس خارج نہیں ہوئی،پورٹ حکام نے دعویٰ مسترد کر دیا

زہریلی گیس کے مضر اثرات، حکام نے درآمد کی گئی امریکن سویابین کی وجہ بننے کا دعوی مسترد کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے علاقے کیماڑی میں زہریلی گیس کے پھیلنے سے وہاں کے رہائشی شدید متاثر ہونے کے بعد 14 سے زیادہ لوگ اس زہریلی گیس  سے جان کی بازی ہار گئے۔ جبکہ باقی متاثرہ لوگوں کا قریبی ہسپتالوں میں علاج جاری ہے۔ جسکا سبب حال ہی میں پہنچنے والےہرکولیس جہاز میں موجود سویا بین کی آف لوڈنگ کے دوران خارج ہونے والی گیس کو خیال کیا جا رہا ہے۔

جبکہ ڈائریکٹر جنرل پلانٹ پروٹیکشن فلک ناز کا اپنی رپورٹ میں کہنا ہے کہ سویابین میں کسی قسم کے حشرات یا مضر گیس کے اثرات نہیں ملے۔ اور اس سے خارج ہونی والی گیس کے انسانی صحت پر کوئی اثرات مرتب نہیں ہوتے۔

انکا اپنی رپورٹ میں مزید کہنا تھا کہ سویابین سے لدے جہاز کو امریکا سے روانگی سے پہلے فاسفین کی گولیوں سے ٹریٹ کیا گیا تھا جبکہ کراچی کی بندرگاہ پہنچنے کے بعد فاسفین کے اثرات ختم ہوچکے تھے،کراچی بندرگاہ پہنچنے پر اگر زرعی مصنوعات میں حشرات موجود نہ ہو تو کیڑے مار ادویات کا اسپرے نہیں کیا جاتا۔ اس لیے کراچی کی بندرگاہ پر آف لوڈنگ سے قبل اس پر کیڑے مار ادویات کا اسپرے نہیں کیا گیا۔

بعدازاں حکام کی جانب سے کہنا ہے کہ انہوں نے 15 فروری کو ہرکولیس جہاز پر جاکر امریکا سے درآمد کی گئی سویا بین کا تجزیہ جانچ کی، تاہم اس کے ٹیسٹ کیے گئے نمونوں میں کسی قسم کے زرعی حشرات نہیں پائے گئے۔

خیال رہے کہ کراچی کے ضیاء الدین اسپتال کیماڑی میں گیس سے متاثرہ 82 افراد لائے گئے جنہیں فوری طور طبی امداد فراہم کرنے کے بعد اسپتال سے فارغ کردیا گیا، متاثرہ افراد میں سے کسی کی حالت تشویشناک نہیں تھی۔ ہسپتال ذرائع کے مطابق ان تمام متاثرہ افراد کو سانس لینے میں دشواری کا سامنا تھا۔

بعدازاں حکومت نے بعد جہاز سے گیس کا اخراج روکنے کے لیے سویابین کے آف لوڈ کرنے پر پابندی لگا دی  اور جہاز کو کراچی کی بندرگاہ سے فوری ہٹا کر دوسری جگہ منتقل کرنے کا حکم دیا۔ لیکن تاحال جہاز کو بندرگاہ سے نہیں ہٹایا گیا۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>