سنہ 2020 میں پاکستان اوربھارت کے درمیان جوہری جنگ کا خدشہ ۔ میونخ سیکورٹی رپورٹ

1947 کے بعد سے اب تک بھارت اور پاکستان کے مابین  تعلقات ہمیشہ سے ہی اونچ نیچ ادوار کا  شکار رہے  اور حالیہ کچھ جھڑپوں سے معاملات کافی حد تک سنگین شکل اختیار کر چکے ہیں ۔ یہ دونوں ہی ملک ایٹمی طاقت ہیں ۔ اگر دونوں کے مابین جنگ چھیڑتی ہے تو اس کے اثرات صدیوں تک اپنی چھاپ چھوڑیں گے ۔

میونخ سیکورٹی رپورٹ میں 2020 میں پاکستان اوربھارت کے درمیان جوہری جنگ کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر میں کوئی واقعہ ہوا تو پاکستان اوربھارت کے درمیان جوہری جنگ چھڑسکتی ہے، جنگ ہوئی تو پوری دنیا متاثرہوگی اور بارہ ملین سے زائد افراد فوری طور پر ہلاک ہوجائیں گے

میونخ  سیکورٹی رپورٹ میں بتایا گیا کہ پاکستان اور بھارت کے پاس  سو سے ڈیڑھ سوجوہری ہتھیار موجود ہیں جو کہ جنگ میں استعمال ہو سکتے ہیں جس سے  سولہ سے چھتیس ٹن کاربن کے سیاہ دھوئیں کا اخراج ہوگا۔

اس سیکورٹی رپورٹ کے مطابق اگر جوہری جنگ ہوتی ہے تو  زمین کے درجہ حرارت میں 2 سے 5 ڈگری کمی  آے گی جبکہ سورج کی روشنی میں 20 سے 35 فیصد کمی آئیگی

اور اس کی وجہ سے زمین پر پیداواری صلاحیت 15 سے30 فیصد کم ہوجائے گی۔

سیکورٹی رپورٹ میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ  2019 میں پاکستان میں دہشت گرد حملوں میں واضع طور پر  کمی آئی ہے۔

رپورٹ میں  افغانستان  کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس رپورٹ میں افغانستان کی سلامتی کی صورتحال کا بھی ذکر کیا گیا ہے  جو آج تک غیر مستحکم ہے۔اور ساتھ ہی پلوامہ حملے کا ذکر کیا گیا جو 14 فروری ، 2019 کو ہوا تھا جس کے نتیجے میں  بھارت اور پاکستان کے مابین کشیدگی بڑھی ہوئی ہے۔

یونیورسٹی آف کولوراڈو  بولڈر اینڈ روٹگرز کے مطالع میں کہا گیا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کی ایٹمی جنگ ایک ہفتہ سے بھی کم عرصہ تک جاری رہے گی  اور "50-125 ملین افراد کی ہلاکت” ہوسکتی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اموات کی تعداد دوسری جنگ عظیم سے کافی حد تک زیادہ  ہوگی۔

یہ بھی کہا گیا کہ ایٹمی جنگ پورے سیارے کو شدید سردی سے دوچار کرسکتی ہے ، ممکنہ طور پر ایسا درجہ حرارت جو کہ  آخری برفانی دور کے بعد سے نہیں دیکھا گیا ۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>