شریف برادران کی شوگر ملز پر چھاپہ ، 55 ہزار سے زائد بوریاں برآمد

بہاولپور: چنی گوٹھ میں شریف برادران کی شوگر ملز پر چھاپہ ۔۔۔ذخیرہ کی گئی چینی کی 55 ہزار سے زائد بوریاں برآمد، گودام سیل

تفصیلا کے مطابق چنی گوٹھ میں شریف برادران کی ملکیتی اتفاق شوگر ملز پر چھاپہ مار کرسٹاک کی گئی چینی کی 55ہزار سے زائد بوریاں برآمدکرلی گئیں۔

شریف برادران کی یہ شوگر ملز بند پڑی ہے اور اس سال اس میں کرشنگ بھی نہیں کی گئی۔

اسسٹنٹ کمشنر نعیم صادق چیمہ اورڈی او انڈسٹریز کی سربراہی میں ٹیم نے ملز کو سیل کردیا ہے ،ملز پر چھاپہ سپیشل برانچ پولیس کی اطلاع پر ماراگیا۔

  • جن لوگوں کو شوگر ملز کے کام کرنے کا طریقہ ہی معلوم نہیں وہ یہ سب کررہے ہیں ، شوگر ملز سال میں صرف تین مہینے کیلئے چلتی ہیں ، اس دوران وہ اپنی پروڈکشن کرلیتی ہیں اور پھر سارا سال یہ چینی بیچی جاتی ہے ، تب تک یہ شوگر ملز میں ہی رہتی ہے ، اس کے گوداموں کا سارا ریکارڈ کین کمشنر کے پاس ہوتا ہے ، شوگر ملز کے اندر موجود سارا سٹاک پہلے بینکوں کے پاس رہن رکھا ہوتا ہے ، تو یہ چینی دراصل بینکوں کی ہی ہوتی ہے جنہوں نے گنا خریدنے کیلئے پیسے دئے ہوتے ہیں، ایک مل جس کی پروڈکشن کیپیسٹی سینتالیس ہزار ٹن ہو وہاں سے صرف دو سو ٹن شوگر کا مل جانا کوئی بڑی بات نہیں ، جن ملوں کی پروڈکشن کیپیسٹی چار لاکھ ٹن ہے ان پر کب چھاپے مارے جائیں گے؟؟

  • اگر چینی 3 مہینے پروڈکشن کرنے کے بعد سارا سال فروخت کرنی ہوتی ہے تو مارکیٹ میں چینی نایاب ہونے کے بعد اس کو مارکیٹ میں لا یا کیوں نہیں گیا


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >