اورنج لائن پر پنجاب حکومت 2 کھرب کی سبسڈی دیگی،تفصیلات منظر عام پر

اورنج لائن ٹرین کی سواری، پنجاب حکومت کی جیب پر بھاری

اورنج لائن ٹرین کے اخراجات کا تخمینہ قریب 9 ارب روپے سالانہ لگایا گیا ہے جو سبسڈی کی صورت میں دیا جائے گا

تفصیلات کے مطابق گزشتہ حکومت کا شروع کیا گیا اورنج لائن ٹرین کا منصوبہ اب آہستہ آہستہ اپنا رنگ دکھانے لگا ہے۔

ٹرین کو اگر اپنے اخراجات پر چلایا جائے تو کرایہ عام آدمی کی پہنچ سے باہر ہو جائے گا اور اگر سبسڈی دی جائے تو حکومت کے اربوں روپے اس مد میں نکل جائیں گے

ذرائع کے مطابق خزانہ، منصوبہ بندی بورڈ اور محکمہ ٹرانسپورٹ نے رپورٹ تیار کی ہے جس میں یہ حقیقت سامنے آئی ہے کہ منصوبے کیلیے رواں سال 12ارب 72 کروڑ سبسڈی کا تخمینہ ہے۔ پنجاب حکومت اس مد میں اگلے 20 برسوں تک سالانہ 9 ارب 51 کروڑ کے حساب سے ایک کھرب 93 ارب 55 کروڑ 68 لاکھ 58 ہزار 397 روپے دے گی۔

دوسری طرف ٹرین کا کرایہ 30 روپے رکھنے کے حوالے سے 20 سالہ تخمینہ رپورٹ تیار کی گئی، جس میں بتایا گیا صوبائی حکومت 2024ء سے 2036 ء تک قرض دے گی، 9 کھرب 53 ارب کا مقروض صوبہ سالانہ 6 ارب 28 کروڑ ادا کرے گا۔

واضح رہے کہ اورنج لائن ٹرین پر اس وقت کی اپوزیشن نے شدید تنقید کی تھی اور اسے سفید ہاتھی قرار دیا تھا مگر اس وقت کے وزیر اعلی پنجاب شہباز شریف نے تمام اعتراضات بالائے طاق رکھتے ہوئے یہ منصوبہ شروع کیا تھا۔


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >