کے پی حکومت کا بچوں سے زیادتی کی روک تھام کیلئے خصوصی عدالتیں قائم کرنے کا فیصلہ

خیبر پختونخوا میں بچوں سے جنسی ذیادتی کے واقعات کی روک تھام کیلئے خصوصی چائلڈ پروٹیکشن کورٹ قائم کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔


فیصلہ وزیراعلی کے پی کے محمود خان کی سربراہی میں صوبائی کابینہ کے اجلاس میں کیا گیا۔ فیصلے کے مطابق صوبے بھر میں 7 خصوصی چائلڈ پروٹیکشن کورٹس قائم کی جائیں گی جو ڈویژن کی سطح پر کام کریں گی اور بچوں پر جسمانی اور جنسی تشدد سے متعلق کیسز کی سماعت کریں گی۔
اجلاس کے بعد صوبائی وزیراطلاعات شوکت یوسف زئی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ایڈیشنل ڈسٹرکٹ اور سیشن ججز بھرتی کرے گی اور انہیں خصوصی عدالتوں میں تعینات کیا جائے گا، منصوبے پر سالانہ 50 ملین خرچ ہوں گے۔
پشاور کے علاقے میں سی ٹی ڈی کی کارروائی سے متعلق وزیراطلاعات کا کہنا تھا کہ 5 مشتبہ افراد کی مبینہ ہلاکت پر وزیراعلی کی ہدایات کے مطابق انکوائری ہورہی ہے۔
ان کا مزید کہنا تھا کہ کرونا وائرس سے صوبے کو کوئی خطرہ نہیں ہے، ہم نے حفاظتی اقدامات کیے ہوئے ہیں اسلئے ہمیں کسی قسم کا ڈر نہیں، بہت جلد اس معاملے پر خصوصی اجلاس منعقد کیا جائے گا اور مزید اہم اقدامات کیے جائیں گے۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>