کراچی میں ماسک کی قلت اور مہنگے داموں فروخت،معاملہ سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا

کراچی میں ماسک کی قلت اور مہنگے داموں ماسک فروخت،معاملہ سندھ ہائیکورٹ پہنچ گیا

کراچی میں کورونا وائرس کے بعد شہر میں ماسک کی قلت اور مہنگے داموں فروخت نے شہریوں کو پریشان کردیا۔۔ سندھ ہائیکورٹ میں اس حوالے سے درخواست کی سماعت ہوئی۔۔ درخواست گزار ذوالفقار علی نے موقف اختیار کیا کہ شہرقائد میں ماسک کی قلت
ہے اور مہنگے داموں فروخت کیے جا رہے ہیں جس سے عوام پریشان ہیں۔۔

 

جس پر چیف جسٹس علی مظہر  نے سوال کیا کہ کس نے کہا کہ کورونا وائرس سے  بچنے کے لیےماسک پہننے کی ضرورت ہے؟ کیا کل آپ نے ڈاکٹر  کی پریس کانفرنس نہیں سنی؟ شہر میں ماسک مل تو رہے ہیں؟

کمرہ عدالت میں ماسک پہنی بچی کو مخاطب کرتے ہوئے جسٹس علی مظہر نے پوچھا بیٹا آپ نے ماسک کہا سے لیا جس پر بچی نے کہا کہ مارکیٹ سے بڑی مشکل سے لیا جس پر عدالت میں سب ہی قہقہے لگانے لگے۔

جسٹس محمد علی مظہر نے ریمارکس دیئے کہ  ماسک بیچنے کا نیا طریقہ نکالا ہے، لوگوں میں خوف پیدا کردیا ہے، ایسے حالات میں  ماسک کی من مانی قیمت پر فروخت  لمحہ فکریہ ہے ، بلیک مارکیٹنگ سمجھ سے بالاتر ہے اس کو روکنا کس کا کام ہے ؟

عدالت نے چیف سیکریٹری سندھ ،محکمہ صحت ،اور وفاقی حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا، عدالت نے حکم دیا کہ ماسک کی ذخیرہ اندوزی روکی جائے اور مناسب  قیمتوں پر فروخت یقینی  بنائی جائے۔۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>