کورونا کیخلاف لڑتے لڑتے شہید  ہونے والے ڈاکٹر اسامہ کو سول ایوارڈ دیا جائے گا

ملک بھر میں ڈاکٹرز اور طبی عملہ کرونا کیخلاف فرنٹ لائن پر اپنی جانوں کی پرواہ کئے بغیر لڑ رہے ہیں۔۔ اس وائرس کیخلاف خدمات انجام دینے والے ڈاکٹرز میں سے گلگت بلتستان کے ڈاکٹر اسامہ خود بھی وائرس کا شکار ہوئے اور زندگی بازی ہار گئے۔۔  شہید اسامہ کی خدمات بھلائے نہیں بھولی جاسکتی ہیں۔۔ ملک بھر سے انہیں خراج عقیدت پیش کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔۔ قوم کا ہر فرد ڈاکٹر اسامہ ریاض کو سلام پیش کرتا ہے اور اب  شہید ڈاکٹر اسامہ کو اعلیٰ سِول ایوارڈ دينے کا فيصلہ کرلیا گیا ہے۔۔

گورنر گلگت بلتستان راجہ جلال حسین نے شہید ڈاکٹر اسامہ ریاض کو اعلیٰ سِول ایوارڈ سے نوازنے کی سمری منظور کرلی ہے۔۔ گورنر گلگت بلتستان کا کہنا ہے کہ شہید ڈاکٹر اسامہ ریاض نے بہادری اور شجاعت کے ساتھ متاثرین کا علاج کرکے اپنے فرائض انجام دیئے۔ ڈاکٹر اسامہ کی اس عظیم قربانی پر انہیں اعلیٰ ترین سول ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔۔  امریکی نائب معاون وزیرخارجہ ایلس ویلز نے بھی  ڈاکٹر اسامہ ریاض کے انتقال پر افسوس کا اظہار کیا تھا۔۔

گلگت بلتستان میں آنے والے مسافروں میں  کرونا وائرس کی اسکریننگ کے دوران ڈاکٹر اسامہ ریاض خود بھی اس وائرس کا شکار ہوگئے تھے ، ڈاکٹر اسامہ مقامی اسپتال میں دو  دن تک تشویشناک حالت میں وینٹی لیٹر پر رہے تھے۔۔

ڈاکٹر اسامہ کی طرح ڈاکٹر زین العابدین بھی وائرس کا شکار ہوئے جو اس وقت قرنطینہ میں ہیں۔۔ جبکہ آغا خان  کے تین اور لیاقت نیشنل کے ایک ڈاکٹر میں بھی وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے۔ پنجاب کے دو ڈاکٹرز میں بھی وائرس کی تشخیص ہوئی تھی دونوں کی حالت بہتر ہے۔۔ جڑواں شہروں کے دو ڈاکٹرز بھی اس مہلک وائرس کی تشخیص ہوئی تھی۔۔

ملک بھر میں عوام ان ڈاکٹرز کو خراج تحسین پیش کیا جارہاہے، سوشل میڈیا پر بھی ڈاکٹرز اور طبی عملے کی خدمات کو قابل فخر قرار دیا جارہاہے۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More