افغان مہاجر لیڈی ڈاکٹر پاکستان میں مقبول

 

کرونا وائرس کیخلاف جنگ میں فرنٹ لائن پر لڑنے والے ڈاکٹرز کسی ہیرو سے کم نہیں. جو ایک سچے سپاہی کی طرح اپنی جان کی پراہ کیے بغیر متاثرین کی خدمات انجام دے رہے ہیں.

راولپنڈی کےہولی فیملی اسپتال میں کام کرنے والی افغان مہاجر لیڈی ڈاکٹر بھی اس مہلک وائرس کیخلاف جنگ میں شامل ہیں. افغان مہاجر ڈاکٹر سلیمہ رحمان کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے اپنی خدمات اور پیشہ ورانہ ذمہ داری انجام دے رہی ہیں.

اقوام متحدہ کے ہائی کمیشن برائے مہاجرین (یو این ایچ سی آر) نے اپنے ٹوئٹر اکاونٹ ڈاکٹر سلیمہ کو اس مشکل وقت میں اپنی خدمات انجام دینے پر خراج تحسین پیش کیا ساتھ ہی سلیمہ کی تصویر شیئر اور کارکردگی کو بھی سراہا.

ٹوئٹ میں لکھا کہ سلیمہ پاکستان کے غریب لوگوں کے لیے زندگی کی ایک نئی امید بن گئی ہیں.ڈاکٹر سلیمہ رحمان کا شمار ان افغان مہاجرین میں ہوتا ہے جو پاکستان میں مختلف شعبوں میں اپنی خدمات انجام دے رہے ہیں.

پاکستان میں اس وقت ستائیس لاکھ سے زائد افغان مہاجرین موجود ہیں.جس میں صرف چودہ لاکھ ستائیس ہزار کو مہاجرین کی حیثیت حاصل ہے باقی غیر قانونی رہائش پزیر ہیں.اٹھارہ سالوں سے ان مہاجرین کی واپسی کا سلسلہ جاری ہے.

پاکستان میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد چار ہزار باہتر ہوچکی ہے. پنجاب میں دوہزارافراد وائرس کا شکار ہوچکے ہیں. ملک بھر میں ہلاکتیں اٹھاون ہوگئی ہیں.چار سو اٹھاون
افراد صحت یاب ہوئے ہیں۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More