سخت لاک ڈاؤن کے سندھ حکومت کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے،معمولات زندگی مکمل بحال

سندھ خصوصاً کراچی میں صوبائی حکومت کی کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے لگائے گئے لاک ڈاؤن پر عمل درآمد کی کوششیں مکمل طور پر ناکام ہوگئیں۔

جی ٹی وی کے پروگرام سرعام میں میزبان اقرار الحسن نے کراچی میں سندھ حکومت کی کارکردگی کا پول کھول دیا، پروگرام میں دکھایا کہ لوگ اپنی روزمرہ مصروفیات میں مصروف ہیں کراچی کے مختلف علاقوں میں محلے اور گلیاں لوگوں سے اسی طرح آباد ہیں جیسے لاک ڈاؤن سے پہلے ہوتیں تھیں، یا شائد اس سے زیادہ آباد ہوگئی ہیں کیونکہ لوگوں کے روزگار بند ہوگئے ہیں گھر میں بیٹھے رہنے کے بجائے کراچی کے عوام محلوں میں چوراہوں اور گلیوں میں ٹولیوں کی شکل میں پھیلے ہوئے ہیں۔

پروگرام کے میزبان اقرار الحسن نے عوام سے بات کرتے ہوئے پوچھا کہ آپ کیوں گھروں میں نہیں بیٹھ رہے تو لوگوں کا کہنا تھا کہ ہم بھوکے مر جائیں گے۔ حکومت نے اربوں کی امداد کے اعلانات کردیئے یہاں کسی گھر میں ایک ٹکے کا راشن نہیں پہنچایا گیا۔

ہمیں کہا جاتا ہے گھر بیٹھو تو گھر بیٹھ کر بھوکے مر جائیں؟ ہمیں گھر بٹھانا ہے تو کھانے کیلئے انتظامات تو کیے جائیں، ہم کیسے گھروں میں بیٹھیں حکومت کی کارکردگی صفر ہے میڈیا پر بیٹھ کر صوبے میں مکمل لاک ڈاؤن سخت لاک ڈاؤن کے اعلانات سے کچھ نہیں ہوتا لوگ گھروں میں نہیں بیٹھ رہے وہ روزگار کی تلاش میں نکل رہے ہیں اور نکلتے رہیں گے۔

اقرار الحسن سے گفتگو کرتے ہوئے ایک نائی جس نے دکان کھول رکھی تھی کا کہنا تھا کہ جو روزانہ کماتے ہیں وہ شام کو گھر میں کھاتے ہیں حکومت یا کسی ادارے کی جانب سے ہمیں کوئی مدد فراہم نہیں کی گئی، حکومتی نمائندے ٹی وی پر تو کہتے ہیں کہ صوبے میں سخت لاک ڈاؤن ہے لیکن ایسا نہیں ہے حکومت نے صرف کاروبار ، بازار، فیکٹریاں مساجد بند کروائی ہیں اور اب لوگ کہیں نہیں جاسکتے تو یہ گلیوں محلوں میں موجود ہیں گھر میں صرف وہی رہتا ہے جس کے گھر میں کھانے کو ہے۔

سندھ حکومت نے صوبے میں پہلے کیس کے بعد سے لاک ڈاؤن کررکھا ہے جسے دیگر صوبوں سے مزید سخت بھی کیا گیا ہے جیسا کہ جمعہ کے روز صوبے میں 3 گھنٹوں کیلئے مکمل لاک ڈاؤن کردیا جاتا ہے، لیکن حکومت شہریوں کی امداد اور مشکل وقت میں ان کیلئے راشن اور ضروریات زندگی کی اشیاء کے اسباب پیدا کرنے میں مکمل ناکام ہوگئی ہے۔

تاجر برادری ہو یا علماء سب حکومت پرلاک ڈاؤن میں نرمی کیلئے شدید دباؤ ڈال رہے ہیں،لیکن حکومت نہ کاروبار کھولنے کی اجازت دے رہی ہے اور نہ عوام تک امداد پہنچا کر انہیں گھروں تک محدود رکھنے میں کامیاب ہوئی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >