طیارہ حادثہ، ایک ہی خاندان کے چار افراد لقمہ اجل بنے

طیارہ حادثہ، ایک ہی خاندان کے چار افراد لقمہ اجل بنے

المناک طیارہ حادثے نے جہاں کئی زندگیاں نگلیں وہیں  ایک ہی خاندان کے چار افراد زندگی کی بازی ہار گئے۔ وقاص طارق نامی مسافر اپنی اہلیہ اور دو بچوں کے ہمراہ لاہور سے کراچی آرہے تھے کہ حادثے کا شکار ہوگئے۔ جاں بحق ہونے والے بچوں کی عمریں سات سے دس سال کے درمیان تھیں۔ متوفی خاندان کے ایک رشتے دار کے مطابق وقاص اپنی بیٹی کی ‘روزا کشائی’ اور اپنے بیٹے کی سالگرہ منانے کراچی جا رہا تھا۔

پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز کے مسافر بردار طیارے میں سوار 97 مسافر حادثے میں جاں بحق ہوگئے ، طیارہ  کراچی کے رہائشی علاقے میں گر کر تباہ ہوگیا ، بدقسمت طیارے کا خوش قسمت مسافر محمد زبیر معجزانہ طور پر محفوظ رہا۔ بینک آف پنجاب کے صدر ظفر مسعود بھی محفوظ رہے۔

گزشتہ روز  طیارے نے کراچی کے ہوائی اڈے پر لینڈنگ کے لئے متعدد راستے طے کیے لیکن ناکام رہا اور آبادی پر گر کر تباہ ہوگیا، قومی کیریئر کی پرواز پی کے 8303 لاہور علامہ اقبال بین الاقوامی ہوائی اڈے سے روانہ ہوئی اور ہوائی اڈے سے تقریبا 44 کلو میٹر دور ملیر میں ماڈل کالونی کے علاقے میں گر کر تباہ ہوگئی۔جاں بحق افراد کی شناخت کاعمل جاری ہے۔

طیارے میں عملے کے سات افراد اور بانوے مسافر سوار تھے۔مسافروں میں اکیاون مرد ،اکتیس خواتین اور نوبچے شامل تھے۔ ایئربس اے 320 کے کاک پٹ اور کیبن کریو کا تعلق لاہور سے تھا۔ کیپٹن سجاد گُل طیارہ اڑا رہے تھے اور فرسٹ آفیسر عثمان اعظم ان کے ساتھ تھے، دیگر عملے میں تین اسٹیورڈز اور تین ایئرہوسٹس تھیں،ایک ایئرہوسٹس کو عین روانگی کے وقت طیارے سے اتار کر اسٹینڈ بائی ائر ہوسٹس انعم مسعود کو سوار کرایا گیا تھا۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More