جاپان نے پاکستان سے اینیمل کیسنگ منگوانے پر عائد پابندی ختم کر دی

 جاپان نے پاکستان سے اینیمل کیسنگ منگوانے پر عائد پابندی ختم کر دی

جاپان نے پاکستانی اینیمل کیسنگ (جانوروں کی انتڑیاں و جلد) کی درآمد پر عائد پابندی ختم کردی ہے، اس سے پہلے جاپان نے پاکستانی آموں اور گلاب کی پتیوں کے معائنے میں بھی نرمی کا اعلان کیا تھا۔

جاپان کے چیف ویٹرنری آفیسر کے دفتر کے مطابق 2017 سے پاکستانی اینیمل کیسنگ کی درآمد پر عائد پابندی اٹھا لی گئی ہے۔ یہ پابندی پاکستان سے جاپان کو اینیمل کیسنگ سپلائی کرنے والے سب سے بڑے ایکسپورٹر میسرز یونائیٹڈ کارپوریشن لاہور کی جانب سے جاپانی معیاراور قوائد و ضوابط کے مطابق اپنے پراسسینگ یونٹ کو اپ گریڈ کرنے کے بعد اٹھائی گئی ہے۔ جاپانی ماہرین کی ٹیم نے پابندی عائد کرنے کے بعد نومبر 2017 میں اس یونٹ کا معائنہ بھی کیا تھا، لیکن اس کے بعد بھی یہ معاملہ 2 سال لٹکا رہا۔

جاپان میں پاکستانی سفارت خانے کے ٹریڈ اینڈ انویسٹمنٹ آفیسر طاہر حبیب چیمہ کا کہنا تھا کہ جاپان کے محکمہ زراعت، فاریسٹری و فشریز کے انیمل ہیلتھ ڈویژن سے رواں برس دوبارہ رابطہ کیا گیا جس موقع پر دونوں جانب سے متعلقہ سٹیک ہولڈرز کو بھی شامل کیاگیا، یہ مذاکرات جنوری سے مارچ تک جاری رہے جس کے بعد سرٹفیکیٹ کے مسودے کو حتمی شکل دی گئی۔
یاد رہے کہ جاپان کی جانب سے پاکستانی اینیمل کیسنگ(جانوروں کی انتڑیاں اور جلد) کی درآمد پر جاپان کے محکمہ زراعت، فاریسٹری و فشریز کے اینیمل ہیلتھ ڈویژن نے اے ایچ آر ایس جیم کے تحت پابندی عائد کی تھی۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More