پاکستان سٹیل ملز کی تباہی کا ذمہ دار کون؟

سینئر صحافی اور تجزیہ کار رؤف کلاسرا کا کہنا ہے کہ سیاسی حکومتوں نے پاکستان کے ایک اور ادارے کو اپنے ذاتی مفاد کی بھینٹ چڑھادیا۔

یوٹیوب پر اپنے وی لاگ میں رؤف کلاسرا کا کہنا تھا کہ 2006 میں پاکستان سٹیل ملز کی نجکار ی پر پاکستان سپریم کورٹ نے مداخلت کرتے ہوئے حکومت کو اس ادارے کو بیچنے سے روک دیا تھا، پرویز مشرف پاکستان سٹیل ملز کو 9 ارب روپے کے منافع پر چھوڑ کے گئے تھے مگر پاکستان پیپلزپارٹی کی حکومت نے آتے ہی اس میں اندھا دھند سیاسی بھرتیاں شروع کردیں، اسی دور میں پاکستان پیپلزپارٹی کے لگائے گئے سٹیل ملز کے سربراہ کے خلاف کرپشن کے کیسز بھی سامنے آئے جس کی تحقیقات پر ایف آئی اے کے 2 افسران کو اس وقت کے وزیرداخلہ رحمان ملک نے تبدیل کردیا تھا اور ان کیسز پر تحقیقات رک گئیں۔

اس دور میں پاکستان سٹیل ملز 104 کھرب کے نقصان میں چلی گئی، پیپلزپارٹی کے دور حکومت کے بعد مسلم لیگ ن اور اسحاق ڈار نے اسٹیل ملز کو بالکل ہی بند کردیا، یہ ہر بجٹ میں سٹیل ملز کو پیروں پر کھڑا کرنے کے بجائے اس کے ملازمین کی تنخواہوں کیلئے فنڈز مختص کردیتے تھے اور اپنی سٹیل ملز ہونے کی وجہ سے انہوں نے ملکی ادارے کو تباہی کے دہانے کی جانب دھکیلنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔

رؤف کلاسرا نے کہا کہ 10 سال کی تجربہ کار سیاسی قیادت کی حکومتوں میں اتنے نااہل لوگ تھے کہ ایک ادارے کی بحالی کا پلان نہیں بناسکے، ہر بار یہی بات ہوتی اس کی بحالی کیلئے پلان بنایا جائے اور ملازمین کی تنخواہیں جاری کردی جاتی تھیں، ملازمین کی کوئی غلطی نہیں ہے جب آپ ایک ادارے سے کام نہیں لیں گے اس سے پروڈکشن ہی نہیں کروائیں گے تو ملازمین کیا کرسکتے ہیں اگر یہ ادارہ کام کررہا ہوتا تو ملازمین 2 گنا بھی ہوتے تب بھی اتنا خسارا نہ ہوتا۔

رؤف کلاسرا نے کہا کہ اس کے بعد عمران خان کا دور آیا ان کے گزشتہ دو سالوں میں پاکستان سٹیل ملز کی بحالی کی ایک کوشش نہیں کی گئی ان پر تنقید اس لیے زیادہ ہورہی ہے کیونکہ انہوں نے اپوزیشن میں رہتے ہوئے حکومتوں پر پاکستان سٹیل ملز کی تباہی پر اتنی تنقید کی اور اس کی بحالی کیلئے اتنے دعوے کیے کہ ان کی حکومت کے آتے ہی لوگوں کو امید تھی کہ یہ ادارہ اب اپنے پیروں پر کھڑا ہوجائے گا لیکن اب اچانک اسد عمر صاحب نے اس ادارے کے تمام ملازمین کو فارغ کرنے کا بم پھاڑ دیا۔

سینئر صحافی نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے اپنے دعوؤں کے باوجود اس ادارے کو بند کرنے اور ملازمین کو فارغ کرنے کا فیصلہ کرلیا، ان کی حکومت میں اسٹیل ملز کی بحالی کی ایک بھی سنجیدہ کوشش نہیں کی گئی، جیسے گزشتہ حکومتوں نے اس ادارے کو تباہ کیا اسی طرح اس حکومت نے اپنے وعدوں کے برعکس اس پر فیصلے کیے اور یہ ادارہ اپنی موت آپ مرگیا۔

ہم فوجی حکومتوں پر بے حد تنقید کرتے ہیں لیکن سیاسی حکومتوں کے برعکس انہوں نے اداروں کو چلایا ہے لیکن جمہوری حکومتوں نے انہیں بربا د کردیا، اسد عمر اگر کچھ کر نہیں سکتے تو اپنا وہ وعدہ ہی پورا کردیں جو انہوں نے اسٹیل ملز کے ورکرز سے کیا تھا کہ میں ان کے ساتھ کھڑا رہوں گا۔

    MPA (656 posts)

    اس بھائی صاحب کو ہر چیز اور ہر معاملے کا پتا ہے پتا نہیں تو صرف عمران خان کو نہیں۔۔عزت ملی تھی لیکن اس بندے سے سنبھالی نہیں گئی۔۔ڈر ہے روف کلاسرا پاگل نہ ہو جائے کہ اسے کوئی لفٹ نہیں کروا رہا

    3
    1

    Chief Minister (15k + posts)

    I stopped watching his video blogs for a long time. Now a days RK is competing with Talat Hussain and for me both are intellectuals and one need wisdom of PMLN supporters to absorb their wisdom.

    Minister (4k + posts)

    بے روزگار کو بے روزگاروں کا درد  ستا رہا ہے۔

    یا پھر یہ ذیادہ مناسب ہے کہ۔۔۔۔ روندی اے یاروں نوں نام لے لے کر بھراواں دا

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More