امریکی خاتون صحافی سنتھیا رچی کو عدالت نے طلب کرلیا

امریکی صحافی کی منگل کو عدالت طلبی، بلاول کو طاقتور لیڈر دیکھتی ہوں، سنتھیا

امریکی خاتون صحافی سنتھیا نے پیپلزپارٹی کی قیادت پر الزامات کی بوچھاڑ کی اور اب ایف آئی اے کو تحریری بیان میں سنتھیا نے کہا ہے پیپلزپارٹی سے نہیں لڑنا چاہتیں، بلاول کو مستقبل کا طاقتور لیڈر دیکھتی ہیں، سنتھیا کاکہنا تھا کہ بلاول کا مستقبل کے رہنما کے طور پر ڈاکومنٹری میں انٹرویو کرنا چاہتی تھی۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان میں قانون کی پابند رہائشی رہیں ۔پاکستان میں ہی ان کی اپنے منگیتر سے ملاقات ہوئی جس کا وہ جلد اعلان کریں گے۔

سنتھیا رچی کے مطابق وہ گزشتہ دو سال سے سیکورٹی فورسز کی معاونت سے پی ٹی ایم کے بارے میں تحقیقات کر رہی ہیں ،اس دوران پی ٹی ایم اور پیپلز پارٹی کی ملک دشمن سرگرمیوں کے درمیان تعلق کے بارے میں انکشاف ہوا۔

امریکی خاتون صحافی سنتھیا رچی کو منگل کو عدالت طلب کرلیا گیا,ایف آئی اے، سائبر کرائمز اور پی ٹی اے کونوٹس جاری کرتے ہوئے9جون تک جواب طلب کیا گیا ہے ۔ ایڈیشنل سیشن جج جہانگیر اعوان نے پیپلزپارٹی اسلام آباد کے صدر ایڈووکیٹ راجہ شکیل احمد عباسی کی امریکی صحافی کیخلاف اندراج مقدمہ کی درخواست پر امریکی خاتون کو طلب کیا ہے ۔

گزشتہ روز اسلام آباد کے ایڈیشنل سیشن جج جہانگیر اعوان نے شکیل عباسی کی درخواست پر سماعت کی جس میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ امریکی صحافی نے سوشل میڈیا پر بے نظیر بھٹو کے خلاف مہم چلائی۔

سنتھیا رچی نے کہا تھا کہ 2011ء میں جب رحمان ملک وزیر داخلہ تھے انہوں نے زیادتی کی، سابق وزيراعظم یوسف رضا گیلانی اور سابق وزیر صحت مخدوم شہاب الدین نے بھی ہراساں کیا تھا ۔

پی پی رہنماؤں نے الزامات کی تردید کردی ۔ یوسف رضا گیلانی نے کہا کہ سنتھیا رچی کیخلاف پاکستان اور امریکا میں ہتک عزت کا دعوی دائر کیا جائے گا۔

رحمان ملک نے کہا الزامات من گھڑت، بیہودہ اور نازیبا ہیںکسی کے اُکسانے پر لگائے گئے۔ مخدوم شہاب الدین نے کہا کہ امریکی خاتون سستی شہرت کیلئے الزام لگارہی ہیں ۔

دوسری خانب سنتھیا نے واضح کیا کہ وہ دستاویزی ثبوت کے بغیر ہتک آمیز بیانات نہیں دیتیں ۔اس پورے معاملے کا حل یہ ہے کہ پیپلز پارٹی مجھ سے کھلی معافی مانگے۔

امریکی سفارتخانے کا کہنا ہے کہ پاکستان میں ذاتی حیثیت میں مقیم بعض امریکیوں کے معاملات پر وہ تبصرہ نہیں کرسکتے۔

سنتھیا کے مطابق اکتوبر 2018ء میں ان کی دورہ میرانشاہ کی تصاویر سوشل میڈیا پر سامنے آئیں تو پی ٹی ایم کے ہمدردوں اور حامیوں نے انہیں آن لائن ہراساں کرنا شروع کیا,ہراساں کرنےوالوں میں
گلالئی اسمٰعیل، ندا کرمانی ، ماروی سرمد ، حسین حقانی ،ان کی اہلیہ فرح ناز اصفہانی ،طارق فتح سمیت دیگر شامل تھے

    (2 posts)

    پاکستان عدلیہ میں ع  نہی ہے ، یہ صرف دلیہ رہ گی ہے، اسلام آباد کے جج کا دل بھی آ گیا ہو گا

    ابھی تو اطہر صاحب کی دلیہ بھی حرکت میں آ گی، اس خاتون کو چپ کروانا ہے آخر

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More