کراچی حملے میں شہید افتخار واحد دو دن بعد ملازمت سے ریٹائر ہونے والے تھے

پاکستان سٹاک ایکسچینج حملے میں شہید ہونے والے افتخار واحد جو اپنی ملازمت سے دو دن بعد ریٹائر ہونے والے تھے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان سٹاک ایکسچینج پر آج صبح دہشت گردوں کی جانب سے اچانک حملہ کر دیا گیا، جسے پاکستان سٹاک ایکسچینج کے گارڈز اور رینجرز کے اہلکاروں نے مل کر ناکام بنایا، دہشت گردوں کے اس حملے میں مرکزی گیٹ پر موجود 60 سالہ افتخار واحد شہید ہوگئے جنہیں اپنی مدت ملازمت پوری کرنے کے بعد دو دن بعد ریٹائر ہو جانا تھا۔

پاکستان سٹاک ایکسچینج پر دہشت گردوں کی جانب سے کیے گئے حملے میں پاکستان اسٹاک ایکسچینج کے چار سکیورٹی گارڈ اور ایک سندھ پولیس کا سب انسپکٹر شہید ہوا، تاہم جوابی کارروائی میں حملہ آور ہونے والے چاروں دہشت گردوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا اور پاکستان کو ہونے والے ناقابل تلافی نقصان سے بچا لیا گیا۔

دہشت گردوں کے حملے میں شہید ہونے والے افتخار واحد کے دیگر سیکیورٹی گارڈز ساتھیوں نے خبر رساں ادارے کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ صبح سے غمزدہ  ہیں اور بار بار پانی پی رہے ہیں کہ کہیں ہم اپنے ساتھیوں کو کھو دینے کے غم سے بے ہوش نہ ہو جائیں۔یہ ہمارے لیے بہت مشکل وقت ہے کیوں کہ ہم نے اپنے ساتھیوں کو اپنی آنکھوں کے سامنے شہید ہوتے ہوئے دیکھا ہے۔

خبر رساں ادارے کے مطابق کہ شہید ہونے والے 60 سالہ افتخار واحد کا گھر اسٹاک ایکسچینج کے عقب میں واقع ہے، جہاں پر ان کے بیٹے عزاج واحد تعزیت کے لیے آئے ہوئے لوگوں سے تعزیت وصول کر رہے ہیں، عزاج واحد جسمانی طور پر معذوری کا شکار ہیں اور وہ اپنی اس معذوری کی وجہ سے کام کاج کرنے سے قاصر ہیں۔

کراچی حملے میں شہید افتخار واحد دو دن بعد ملازمت سے ریٹائر ہونے والے تھے

عزاج واحد نے بتایا کہ میرے والد ہمارے گھر کے واحد کفیل تھے، میں اپنی معذوری کی وجہ سے کام کاج کرنے سے قاصر ہوں جبکہ میرے دیگر بہن بھائی ابھی چھوٹے ہیں، میرے والد جو گزشتہ دس سال سے اسٹاک ایکسچینج میں سکیورٹی گارڈ کی حیثیت سے کام کر رہے تھے، جب انہوں نے یہاں کام شروع کیا تو ان کی تنخواہ 12 ہزار روپے تھی جو اب بڑھ کر 18 ہزار روپے ہو چکی تھی۔

عزاج واحد کا خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مجھے اپنے والد کی شہادت پر فخر ہے انہوں نے اپنے وطن کی خاطر جان قربان کی ہے، میں اپنے والد کی بہادری اور شجاعت پر ان کو سیلوٹ پیش کرتا ہوں، میرے والد صاحب نے دہشتگردوں کا ڈٹ کر مقابلہ کیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >