ام رباب چانڈیو کے رشتہ داروں کا قتل، سپریم کورٹ نے محفوظ فیصلہ سنا دیا

سندھ میں ام رباب چانڈیو کے قریبی رشتہ داروں کے قتل کے  معاملےپرسپریم کورٹ محفوظ فیصلہ سنادیا۔ سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ نے انتیس مئی کو فیصلہ محفوظ کیا تھا،

جو آج جسٹس مشیر عالم نے پڑھ کر سنایا ہے،قتل کے مقدمے میں نامزد ملزم گوہر علی درخواست پر دلائل مکمل ہونے کے بعد  فیصلہ محفوظ کیا گیا تھا۔درخواست گزار نے مقدمہ آرڈنری عدالت سے دہشتگردی کی عدالت میں منتقل کرنے کی استدعا کی تھی۔

سندھ ہائیکورٹ  نے ام رباب کے چچا کی درخواست پر مقدمہ دہشتگردی کی عدالت منقتل کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔ سپریم کورٹ نے ملزم گوہر علی درخواست پرمقدمہ اے ٹی سی سے منتقل کرنے کا سندھ ہائیکورٹ کا فیصلہ کالعدم قرار دے دیا ہے۔

ام رباب کا تعلق سندھ کے ضلع دادو کی تحصیل میھڑ سے ہے۔ دو سال قبل سال 17 جنوری کو میھڑ شہر میں ڈی ایس پی پولیس کے دفتر کے سامنے ان کے والد مختیار چانڈیو، دادا کرم اللہ چانڈیو اور چچا قابل چانڈیو کو مسلح افراد نے فائرنگ کر کے قتل کردیا تھا۔

    Senator (1k + posts)

    پاکستان کے حصے میں سواے تباہی کے اور کچھ نہیں

    ام رباب کو چاہئے کہ پیسے خرچ کرے ان حرامخوروں کو دفع کرے جہنم میں جائیں سارے جج  ، پولیس کو پچاس لاکھ دے تو وہ سارے مجرم خود ہی مار دیں گے

    23

    Minister (3k + posts)

    very sad our  judicial system is very weak ,we have had very few judges who still works honestly ,few years back people buy the opponent advocates but now they buy the judges,

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More