اسلام آبادمندر:فواد چودھری کی پرویز الہی پر پہلے تنقید پھر معافی،پھر دونوں ٹویٹ ڈیلیٹ

پنجاب اسمبلی کے اسپیکر چوہدری پرویز الہی نے خبر رساں ادارے کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے اسلام آباد میں نئے مندر بنانے کی مخالفت کردی، انہوں نے کہا کہ نئے مندر بنانے کی بجائے پرانے مندروں کی تزئین و آرائش کی جائے، جس کے لیے فنڈز مختص کیے گئے ہیں۔

اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہی کا کہنا تھا کہ پاکستان جو اسلام کے نام پر وجود میں آیا ہے، اس کے دارالحکومت اسلام آباد میں نئے مندر بنانا نہ صرف اسلام کی روح کے خلاف ہے بلکہ ریاست مدینہ کے بھی خلاف ہے۔

خبر رساں ادارے کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے چودھری پرویز الہی نے فتح مکہ کا واقعہ بیان کرتے ہوئے کہا کہ فتح مکہ کے موقع پر نبی کریم صَلَّى اللّٰهُ عَلَيْهِ وَسَلَّم نے حضرت علی رضی اللہ تعالی عنہ کے ساتھ مل کر بیت اللہ میں موجود 360 بتوں کو توڑا تھا۔

انہوں نے کہا کہ ہم ریاست کی اقلیتوں کے ساتھ ہیں لیکن پہلے سے موجود مندروں کی تزئین و آرائش کی جائے نہ کہ نئے مندر تعمیر کیے جائیں، انہوں نے اپنے دورحکومت کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ ہم نے کٹاس راج مندر کی تزئین و آرائش کروائی تھی، گرجا گھروں کی مرمت کے لیے بھی فنڈز مختص کئے گئے تھے لیکن میں سمجھتا ہوں کہ نئےمندر تعمیر نہیں ہونے چاہئیں۔

دوسری جانب پاکستان کی ہندو اقلیتوں نے پرویز الہی کے بیان پر اپنے ردعمل میں کہا کہ سپیکر پنجاب اسمبلی کے بیان پر ہماری دل آزاری ہوئی ہے، انہوں نے پرویز الہی کے بیان پر رد عمل دیتے ہوئے ان سے سوال کیا کہ کیا پاکستان میں اقلیتوں کے لیے عبادت گاہ نہیں بن سکتی؟

دوسری جانی و فاقی وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چوہدری نے اسپیکر پنجاب اسمبلی کے بیان پر سخت رد عمل دیتے ہوئے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ” خدا کا شکر ہے یورپی لیڈر نریندرمودی اور پرویز الہی کی طرح نہیں سوچتے، دائیں بازو کی جانب جھکاؤ دیکھ کر شدید دھچکا پہنچا، یورپ میں مسلمانوں کو مسجد تعمیر کرنے اور عبادت کرنے کی اجازت ہے، ایسے لوگوں کو میثاق مدینہ سمجھنے کی ضرورت ہے، برداشت اسلام کا بنیادی اصول ہے۔

لیکن بعد میں فواد چودھری نے اپنا ٹویٹ ڈیلیٹ کر دیا۔

سپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہی کے بیٹے مونس الہی نے فواد چوہدری کے ٹوئٹ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ ” اگر آپ میں سننے کا مادہ ہوتا تو آپ حقیقت جان لیتے، پرویز الہی مندر کی تعمیر کی مخالفت نہیں کر رہے بلکہ ان کی تجویز ہے کہ مندر سندھ میں بنایا جائے جہاں پر زیادہ ہندو رہتے ہیں، جب آپ ق لیگ میں تھے تو پرویز الہی نے آپ کو کئی سال تک برداشت کیا”۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >