مشتبہ ڈگریوں کے معاملے پر پی آئی اے سربراہ ارشد ملک نے آخر کار خاموشی توڑ دی

مشتبہ ڈگریوں کے معاملے پر پی آئی اے کے سربراہ ارشد ملک نے آخر کار اپنی خاموشی توڑ دی

پی آئی اے کے سربراہ ایئر مارشل ارشد ملک نے پی آئی اے میں موجود جعلی لائسنس اور ڈگریوں کے حامل پائلٹس کے معاملے پر آخر خار کاموشی توڑتے ہوئے کارپوریٹ اداروں کے سربراہوں کو خط لکھا ہے، جس میں انہوں نے کہا کہ مشتبہ لائسنس کے معاملے کو بہتر انداز میں حل کیا جا سکتا تھا لیکن یہ غلط سمت میں چلا گیا، جس کے سبب پی آئی اے کو پوری دنیا میں اپنا دفاع کرنا پڑ رہا ہے ۔

ایئر مارشل ارشد ملک کی جانب سے جاری کیے گئے مراسلے میں کہا گیا ہے کہ تاریخ میں پہلی دفعہ امریکہ کے لئے براہ راست پی آئی اے کی پرواز چلائی گئی، اس کے علاوہ امریکہ، افریقہ، جنوبی کوریا کیلئے خصوصی پروازیں بھی چلائی گئیں، تاہم پابندی سے قبل پی آئی اے 21 ممالک کے لئے اپنی پروازیں چلا رہا تھا۔

سربراہ پی آئی اے نے کہا کہ پی آئی اے بتدریج بہتری کے بعد اپنی تاریخ کی بہترین سیفٹی انڈیکس پر ہے، ایئر مارشل ارشد ملک نے کہا کہ جب سے میں نے پی آئی اے کی کمان کو سنبھالا ہے تب سے ادارے کو کمرشل بنیادوں پر چلایا گیا اور کسی کا بھی دباؤ محسوس نہیں کیا ۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کو سول ایوی ایشن میں اصلاحات لانے کیلئے تجاویز دے رہے ہیں، امید ہے کہ فول پروف انتظامات کے بعد یورپی یونین کےخدشات دور کرنے میں کامیاب ہوجائیں گے اور دوبارہ سے یورپی یونین کے لیے پروازوں کا آغاز ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ اس سارے معاملے کی ذمہ داری ایک اور محکمے کی تھی، جس نے لاپرواہی کا مظاہرہ کرتے ہوئے پی آئی اے کو اس نہج پر پہنچا دیا ہے۔

  • He has a very valid point. glad he did not go into blame games. Now govt should also look into CAA how political appointees have screwed up CAA. anywyas good news is nomore shahid khakan types in power to ruin this any further


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >