سسر کا داماد پر سالی کو اغوا کرکے شادی کا الزام

سسر کا داماد پر سالی کو اغوا کرکے شادی کا الزام۔۔۔ لاہور ہائی کورٹ نے بیوی کو طلاق دیئے بغیر اس کی بہن سے نکاح کرنے والے جوڑے کو 16 جولائی کو پیش کرنے کا حکم دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کور ٹ میں عبدالرشید نامی ایک شہری نے اپنی بیٹی کی بازیابی کیلئے درخواست دائر کی کہ اس کے داماد نے بیوی کو طلاق دیئے بغیر سالی (بیوی کی بہن) کو اغوا کرکے اس سے مبینہ طور پر شادی کرلی ہے جس پر لاہور لائی کورٹ کے جج علی باقر نجفی نے جوڑے کو 16 جولائی کو عدالت پیش کرنے کا حکم دیدیا ہے ۔

عبدالرشید کا کہنا تھا کہ "میرا داماد مقصود ایک دن گھر پر مٹھائی لے کر آیا کہ میں نے کراچی میں کاروبار شروع کردیا ہے اس کی خوشی کی مٹھائی ہے، سب گھر والوں نے وہ مٹھائی کھائی تو سب بے ہوش ہوگئے، ہوش میں آنے پر پتا چلا کہ میری چھوٹی بیٹی خدیجہ اور داماد مقصود گھر سے غائب ہیں”۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے مقصود سے رابطے کی کوشش کی مگر اس نے کسی کا فون نہیں اٹھایا، تھوڑی دیر بعد مقصود نے ہم سے رابطہ کرکے کہا کہ میں نے خدیجہ سے شادی کرلی ہے اور ہم گھر آرہے ہیں۔

مقصود کی بیوی بشریٰ کے علم میں جب ساری صورتحال آئی تو وہ شاک میں چلی گئی اس کا کہنا تھا کہ کیسے میرا شوہر مجھے طلاق دیئے بغیر میری بہن سے شادی کرسکتا ہے؟ اس کے بعد بشریٰ کو مقصود نے اس کے ماں باپ کے گھر بھیج دیا جبکہ خدیجہ اس کے ہمراہ اس کے گھر میں ہی موجود ہے، جس کی بازیابی کیلئے اس کے والد نے پولیس میں شکایت درج کروائی۔

عبدالرشید کا کہنا تھا کہ مقصود اور اس کے ساتھیوں کے ہمراہ قصور کے تھانے میں دوایف آئی آر درج کروائی ہیں، میں نے مقصود کے خلاف میری بیٹی اغوا کی درخواست 22 اگست 2019 کو درج کروائی تھی، جبکہ مقصود کی بیوی بشری نے اپنے شوہر کے خلاف پہلی بیوی کو طلاق دیئے بغیر اسی کی بہن سے نکاح کرنے پرمقدمہ درج کروایا تھا، بشریٰ کو اس مقدمے کو درج کروانے کیلئے ڈسٹرکٹ اور سیشن عدالتوں کے چکر لگانے پڑے کیونکہ پولیس یہ مقدمہ درج کرنے سے انکاری تھی۔

مقدمے کے تفتیشی افسر اے ایس آئی امانت کا کہنا تھا کہ ابھی فی الحال جوڑا لاپتہ ہے، تاہم ان کی تلاش جاری ہے اور جلد انہیں عدالت کے روبرو پیش کردیا جائے گا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >