پاکستانی لائسنس والےپائلٹس کو پرواز سے روکاجائے،یورپی یونین کی 32ممالک کو ہدایت

پی آئی اے کے پائلٹس کی جعلی ڈگریاں سامنے آنے پر یورپی یونین نے پہلے چھ ماہ کے لئے پی آئی اے کی پروازیں معطل کیں اور اب یورپی یونین ایوی ایشن سیفٹی ایجنسی نے اپنے 32 رکن ممالک کی اتھارٹیز کو پاکستانی لائسنس کے حامل پائلٹس کو پرواز سے روک دیا ہے۔ایاسا نے اس حوالے سے بتیس ممالک کی ایوی ایشن اتھارٹیز کے نام مراسلہ بھی جاری کردیاجس کے تحت متعلقہ رکن ممالک کی اتھارٹیز کو پاکستانی لائسنس رکھنے والے والے پائلٹس کو پرواز پر نہ بھیجنے سے متعلق آگاہ کردیا ہے۔

مراسلے میں کہا گیا مشتبہ لائسنس کے باعث اقدام اٹھایا گیا، یہ سنگین معاملہ ہے جس کی وجہ سے ایاسا اپنے تمام رکن ممالک سے پاکستانی لائسنس یافتہ پائلٹس کو پرواز سے روکنے کی سفارش کرتی ہے کیونکہ پاکستان سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے 40 فیصد لائسنسز کے اجراء میں بے ضابطگیوں کا انکشاف سامنے آیا ہے۔ پاکستانی کپتانوں کے لائسنس کے حوالے سے مشتبہ یا ICAO کے ہوابازی کے قواعد و ضوابط کے برخلاف جیسی شکایات بھی موصول ہوئی ہیں۔

مراسلے میں کہا گیا کہ ہوابازی کی صنعت میں اس قسم کی صورتحال باعث تشویش ہے،اسی لئے ایاسا نے بتیس رکن ممالک کو اس معاملے کو سنجیدہ لینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ”سی اے اے پاکستان سے جاری لائسنسز کے حامل پائلٹس کو معطل کیا جائےاور ارکان ممالک کی آرگنائزیشن میں شامل پاکستانی لائسنس یافتہ پائلٹس کی تفصیلات فراہم کی جائیں”۔

 دوسری جانب ماہرین ہوا بازی نے اسے بری خبر قرار دیا ہے،ماہرین کا کہنا ہے کہ اس طرح کے اقدامات مستقبل میں پاکستانی ہوا بازوں کے لیے نقصان دہ ثابت ہونگے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >