بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کا اپنی سزا کے خلاف نظرثانی اپیل دائر کرنے سے انکار

پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں مصروف رہنے والے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادو نے اپنی سزا کے خلاف اپیل دائر کرنے سے انکار کر دیا ہے، یہ بات ایڈیشنل ڈپٹی اٹارنی جنرل احمد عرفان اور ڈی جی جنوبی ایشیا وزارت خارجہ زاہد حفیظ نے اسلام آباد میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتائی۔

ایڈیشنل ڈپٹی اٹارنی جنرل احمد عرفان اور ڈی جی جنوبی ایشیا وزارت خارجہ زاہد حفیظ کا اسلام آباد میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہنا تھا کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن جادیو کو دوبارہ قونصلر تک رسائی کی پیشکش کی ہے، امید ہے بھارت پاکستان کی پیشکش کا مثبت جواب دے گا۔

ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ بھارتی حکومت نے اپنا وکیل پیش کرنے کی درخواست کی ہے جس کو رد کردیا گیا ہے، بھارتی حکومت کو آگاہ کر دیا گیا ہے کہ صرف پاکستانی ہائی کورٹ کے لائسنس یافتہ وکلاء پیش ہوسکیں گے، کلبھوشن یادیو یا اسکا وکیل صرف رحم کی اپیل دائر کرسکتا ہے۔ پاکستان کا قانون فیصلے کا ازسرنو جائزہ لینے کی اجازت دیتا ہے

اڈیشنل اٹارنی جنرل احمد عرفان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان نے 17 جون2020 کو کمانڈر یادیو کو کہا تھا کہ سزا کیخلاف نظر ثانی اپیل دائر کرے تو اسے قانونی رہنمائی فراہم کی جائے گی۔ پاکستان میں کسی وکیل سے ہندوستانی حکومت نے کمانڈر یادیو کی اپیل کی پیروی کیلئے رابطہ نہیں کیا، تاہم بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو، قانونی طور پر منظور شدہ شخص یا بھارتی حکومت، ہائی کورٹ میں درخواست دے سکتے ہیں۔

اس موقع پر موجود ڈی جی جنوبی ایشیا وزارت خارجہ زاہد حفیظ نے بتایا کہ پاکستان نے عالمی عدالت انصاف نے فیصلے پر من و عن عملدرآمد کیا ، بھارتی جاسوس کلبھوشن کی بھارتی ہائی کمیشن اور کلبھوشن کے اہل خانہ سے ملاقات کرائی۔

  • Whats so fucking wrong with pakistani establishment? why keep offering him counselor access? why dont just hang when he proven criminal and terrorist? india just hang our people without evidence and we are doing quite opposite. Harami yeh bhi kahi ba izzat bari na ho jaye.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >