علماءمتعہ کے نام پر لڑکیوں سے جسم فروشی کرواتے ہیں،خاتون کا الزام،ویڈیو وائرل

 

علماءمتعہ کے نام پر لڑکیوں سے جسم فروشی کرواتے ہیں،خاتون کا الزام،ویڈیو وائرل

سوشل میڈیا  پر ایک ویڈیو کلپ بہت تیزی سے وائرل ہو رہا ہے جس میں ایک  خاتون الزام لگا رہی ہیں کہ  علماء متعہ کے نام پر لڑکیوں سے جسم فروشی کرواتے ہیں، خاتون کا اپنے ویڈیو کلپ میں بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ کراچی کی مساجد اور امام بارگاہیں جہاں کے علماء منتظمین ہیں وہ معصوم  لڑکیوں کو بہلا پھسلا کر جسم فروشی کے ناجائز دھندے میں ملوث ہونے پر مجبور کرتے ہیں۔

خاتون نے اپنے ویڈیو کلپ میں بتایا کہ ان علماء کی جانب سے معصوم لڑکیوں کو متعہ کے نام پر عباس ٹاؤن کے بااثر گھرانوں کو پیش کردیا جاتا ہے جہاں پر ان لڑکیوں سے جسم فروشی کا کام کرایا جاتا ہے، خاتون نے بتایا کے ان میں سے متعدد کم عمر اور کمسن لڑکیاں ہیں جن کی زندگیاں اس ناجائز دھندے میں ملوث ہونے کے بعد تباہ ہو رہی ہیں۔

خاتون نے اپنے ویڈیو پیغام میں یہ انکشاف بھی کیا کہ کراچی میں کئی ایسے مدارس ہیں جہاں پر تعلیم دینے والی معلمات بھی اس ناجائز اور ناپاک کام میں ملوث ہیں جو کم سن اور معصوم طالبات کو متعہ کے نام پر اپنا جسم فروخت کرنے پر مجبور کرتی ہیں، خاتون نے اپنی کمیونٹی کی اعلی قیادت خاص طور پر علامہ ساجد نقوی سے اپیل کی ہے کہ وہ اس سارے معاملے کا نوٹس لے کر اس مکروہ دھندے میں ملوث عناصر کو کڑی سے کڑی سزا دلوائیں اور معصوم بیٹیوں کی زندگیاں ویران ہونے سے بچائیں۔

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والے اس ویڈیو کلپ میں واضح طور پر سنا جاسکتا ہے کہ ایک نامعلوم شخص اس خاتون سے سوالات کرتا ہے جس کے جوابات ویڈیو کلپ میں نظر آنے والی لڑکی دے رہی ہوتی ہے، نامعلوم شخص سے گفتگو کرتے ہوئے خاتون کا کہنا تھا کہ ان لوگوں نے مجھے بھی بہت سے لوگوں کے آگے پیش کیا ہے، اگر مجھے امام زمانہ نہ بچاتے تو یہ سلسلہ شاید کبھی نہ رکتا اور میں روز کسی نہ کسی کے آگے پیش ہوتی رہتی۔

  • ہماری معلومات کے مطابق اس لڑکی کا تعلق دیوبندی مدرسے جامعہ بنوریہ کراچی سے ہے اور اپنے مدرسین کی طرف سے طالبات کے ساتھ سالوں سے جاری مسلسل جنسی زیادتیوں، مدرسے میں چلنے والے جسم فروشی کے اڈے کے بارے میں زبان کھولنے کی کوشش کی تو لشکر جھنگوی کے کارندے اورنگ زیب فاروقی کے غنڈوں نے اسکے چھوٹے بھائی کو اغوا کر کے قتل کی دھمکی دے کر یہ ویڈیو بنوائی اور ملبہ اپنے مخالف فرقے پر ڈلوانے کی ناکام کوشش کی

  • this is a planted story ..easily can judge as muharam is coming so another way to hit shua comunity…this lady is saying  what toght her ..if any one doing it that shoyld be penalized not to blame all comunity…

  • Shia community has a bad habit as a whole of idealizing and idolizing their illiterate Zakirs who are always busy giving certificates of  the love of Ahl ul Bait(AS).Even the likes Laddan Jaafri are titled as "Qibla”.Also their Zakirs mostly rely on abusing and maligning of Sahabah and in doing that they start glorifying the actions that according to them were banned by Sahabah particularly by Hazrat Umar and Hazrat Abu Bakar Siddique(RA).Mutaa is one of those things that the shia clerics use across the Muslim world to produce an alternate source of income and in doing that they virtually start acting as pimps for the women interested in Mutaa.I have myself seen this in Iraq.Ironic and tragic especially for the women who have lost their husbands or are divorcees.

  • یہ اگر متعہ کو کوئی حلالہ کی طرح غلط استمال کرے تو وہ بندہ مجرم ہے نہ کہ علماء کمیونٹی ۔۔۔

    پھر متعہ میں طرفینی رضایت شرط ہے جب یہ لڑکیاں راضی نہیں تو پولیس کو اطلاع کیوں نہیں دے رہیں؟؟!

    پھر مطلب یہی خاتون خود کے یہ کارنامے ہوں گے جب کسی عالم نے روکا ہوگا یا کوئی ادارہ رکاوٹ بنا ہوگا تبھی اس نے سوچا بدنام تو ہوں ہی کیوں کہ سب کو بدنام کروں؟!


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >