میں نے اجمل وزیر کو کوئی کمیشن آفر نہیں کیا،ثاقب بٹ ملازم اشتہاری کمپنی

لیک آڈیو میں اجمل وزیر کے ساتھ گفتگو کرنے والے نجی کمپنی کے ملازم ثاقب بٹ کا موقف سامنے آگیا، ثاقب بٹ کا خبر رساں ادارے سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ اجمل وذیر اور اس کے درمیان ہوئی گفتگو کو سیاق و سباق سے ہٹ کر پیش کیا گیا ہے۔

اشتہاری کمپنی کے ملازم کا اپنی گفتگو میں کہنا تھا کہ اس نے اجمل وزیر کو کسی کمیشن کی آفر نہیں کی، اجمل وزیر کے ساتھ آڈیو لیک ہونے کے بعد رابطہ ہوا، فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی میں بلائیں میں وہاں پر پیش ہو کر اپنا موقف دونگا۔

ثاقب بٹ کا خبر رساں ادارے کے نمائندے سے گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میرے اور اجمل وزیر کے درمیان مختلف ٹاپکس پر بات ہو رہی تھی، ان میں سے ایک ٹاپک پروڈکشن اور اس کی کوالٹی کا تھا، ہماری ایک لمبی چوڑی بات چیت تھی جسے کاٹ کر سیاق و سباق سے ہٹ کر پیش کیا گیا۔

خبر رساں ادارے کے نمائندے نے ثاقب بٹ سے سوال کیا کہ آپ اجمل وزیر کو جی ایس ٹی ختم کروانے پر 10 سے 12 فیصد کمیشن دینے کی بات کر رہے تھے یہ آپ انہیں کیوں کہہ رہے تھے؟ اس سوال کا جواب دیتے ہوئے ثاقب بٹ کا کہنا تھا کہ جب میری اجمل وزیر سے بات ہو رہی تھی تو میں اکیلا نہیں بیٹھا تھا ہمارا ایک بڑا فورم بیٹھا تھا جو اس معاملے پر بات چیت کر رہا تھا اور ایک دوسرے کو سمجھا رہے تھے کہ جی ایس ٹی گورنمنٹ کا پیسہ ہے یہ نہیں کم کروایا جا سکتا۔

ثاقب بٹ کا اپنے خصوصی انٹرویو میں مزید کہنا تھا کہ لیک آڈیو میں سیکرٹری کے تبادلے کی نہیں بلکہ ڈائریکٹر ایڈورٹائزمنٹ کی بات ہو رہی تھی جو ہماری کرونا وائرس کی کمپین میں رکاوٹ کر رہے تھے، کیونکہ انہوں نے ہمیں کرونا وائرس کی کمپین ریلیز کرنے کی بجائے وارم اپ ریلیز کا آرڈر دیا تھا، میرا اجمل وزیر کے ساتھ مئی سے رابطہ ہونا شروع ہوا ہے اور انہوں نے آج تک ہم سے ایک پیسے کا منافع طلب نہیں کیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >