خنجراب تا اسلام آباد فائبر آپٹک فعال،احسن اقبال کا حکومت کو کریڈٹ نہ لینے کامشورہ

پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت خنجراب سے اسلام آباد تک نئی فائبر آپٹک کو فعال کردیا گیا ہے۔

سی پیک چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل (ر)عاصم سلیم باجوہ نے ٹویٹر پر جاری اپنے پیغام میں کہا کہ خنجراب سے اسلام آباد فائبر آپٹک کے فعال ہونے کے بعد اگلے مرحلے میں اسلام آباد سے کراچی اور اسلام آباد سے گوادر تک فائبر آپٹک کو پھیلایا جائے گا۔

عاصم سلیم باجوہ نے منصوبے کی تصاویر شیئر کرتے ہوئے لکھا کہ یہ منصوبہ ڈیجیٹل ہائی وے پلان کا حصہ ہے، یہ منصوبہ چین کے اشتراک سے ملک میں ڈیجیٹل اور آئی ٹی کی دنیا میں انقلاب کی بنیاد بنے گا۔

پاک چین فائبر آپٹک ملک میں ریلوے سمیت سی پیک کے تین روٹس کے ساتھ ساتھ بچھائی جائے گی، دونوں ملکوں کے درمیان 820 کلومیٹر طویل خنجراب سے راولپنڈی تک فائبرآپٹک کے پہلے فیز کو ایکٹیو ہوچکی ہے، اس حوالے سے ایک چینی کمپنی نے منصوبے کو ٹیسٹ بھی کرلیا ہے اور حکومت کیلئےبھاری آمدن بھی اکھٹی کی ہے۔

یاد رہے کہ 10 جولائی کو کوہالہ اور آزاد پٹھان پاور پراجیکٹس کی اہمیت کو سمجھنے پر سی پیک اتھارٹی کو وزیراعظم آزاد کشمیر اور تین چینی کمپنیوں کی جانب سے شکریہ ادا کیا گیا۔

سی پیک چیئرمین نے اس حوالے سے اپنی ٹویٹ میں کہا تھا کہ ان دونوں منصوبوں کیلئے الگ الگ ملاقاتیں کی جائیں گی اور منصوبوں پر کام کو شروع کرنے کے عمل سے متعلق معاملات طے کیے جائیں گے، ان منصوبوں سے 1800 میگاواٹ بجلی پیدا کی جاسکے گی جبکہ 8 ہزار افراد کو روزگار فراہم کیا جاسکے گا۔

جنرل عاصم باجوہ کے ٹویٹ پر احسن اقبال کریڈٹ لینے کے لئے میدان میں آگئے اور کہا کہ یہ پراجیکٹ انکی حکومت کا تھا جس کا افتتاح ہم نے 19 مئی 2016 کو کیا تھا اور اسے مئی 2019 میں مکمل ہونا تھا۔

احسن اقبال نے تحریک انصاف کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ اس میں نیا کچھ نہیں ہے، تحریک انصاف ہمارے دور کے پراجیکٹس کا کریڈٹ لینا بند کردے۔

ایک اور ٹویٹ کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ میں 13 دسمبر 2017 کاخنجراب سے اسلام آباد تک فائبر آپٹک سے متعلق یہ ٹویٹ ری ٹویٹ کرنے پر مجبور ہوں۔

احسن اقبال نے تحریک انصاف سے کہا کہ برائے مہربانی جو پراجیکٹس ہم نے شروع کئے ہیں یا مکمل کئے ہیں ان کا کریڈٹ لینا بند کردیں۔ ہمیں یہ بتاؤ کہ آپ نے سی پیک کے تحت کونسا نیا پراجیکٹ شروع کیا ہے؟

قبل ازیںوزیراعظم پاکستان عمران خان کا کوہالہ اور آزاد پٹھان پن بجلی کے منصوبوں پر بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ کوہالہ اور آزاد پتان بجلی کے منصوبوں سے 1800 میگا واٹ پن بجلی پیدا ہوگی اس کے علاوہ ان دونوں منصوبوں سے 8 ہزار ملازمتیں بھی پیدا ہوگئی جس سے بے روزگار ہیں کم کرنے میں مدد ملے گی۔

  • جیسے ہی آپ کرنٹ اکاؤنٹ خساروں، قرضوں، گردشی قرضوں، اداروں کے خساروں کی بات کریں تو نون والے کہتے ہیں پچھلی باتیں چھوڑوں اور یہاں انکی کریڈٹ کی خارش نہیں ختم ہوتی 

  • In ke start kiye hue project mulki economy k liye sufaid hathi sabat hote hain isliye Gen Asim ne is ko theek se handle ker ke project ko delayed or costly hone se bacha ker Pakistani awam per mazeed bojh dalne se bacha liya,…….DURR FITTAY MUNH SO CALLED PROFESSOR.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >