آصف زرداری نے کلفٹن کراچی والا گھر کرپشن کے پیسے سے بنایا،نیب

قومی احتساب بیورو (نیب) نے کہا ہے کہ ہمارے پاس ٹھوس شواہد ہیں کہ آصف علی زرداری نے کلفٹن کراچی کا گھر کرپشن سے بنایا۔ نیب نے احتساب عدالت سے آصف زرداری کا کلفٹن کراچی میں گھر منجمد کرنے کی توثیق کی استدعا کردی۔

نیب نے احتساب عدالت میں سابق صدر آصف زرداری کے خلاف 8 ارب روپے کی مشتبہ ٹرانزیکشن پر جواب جمع کرایا جس میں اس کاکہنا ہےکہ تحقیقات میں اہم پیشرفت ہوئی ہے۔

نیب نے مؤقف اختیار کیا کہ ہمارے پاس ٹھوس شواہد ہیں کہ آصف علی زرداری نے کلفٹن کراچی کا گھر کرپشن سے بنایا اور کلفٹن کراچی گھر کی خریداری کے لیے آصف علی زرداری کے سٹینو گرافر نے رقم دی۔

نیب کے مطابق آصف زرداری کو کلفٹن کراچی گھرکا سوالنامہ دیا جس کا کوئی جواب نہ دیا گیا، سٹینو گرافر مشتاق کے اکاؤنٹ سے گھر کی خریداری کیلئے 15 کروڑ روپے ادا کیے گئے۔

نیب کے جمع کرائے گئے جواب میں کہا گیا ہے کہ آصف زرداری کلفٹن کراچی میں خود گھر کی خریداری کا کوئی ثبوت نہیں دے سکے، سٹینو گرافر مشتاق احمد نے سابق صدر کے ساتھ 104 غیرملکی دورے کیے۔نیب کے مطابق سٹینو گرافر مشتاق کو شامل تفتیش کرنے کی کوشش کی جو فرار ہو گیا۔

نیب اسلام آباد میں سابق صدر کے خلاف پارک لین ریفرنس کے کیس کی سماعت بھی جاری ہے جس کا فیصلہ 6 جولائی کو سنایا جانا تھا تاہم وہ مؤخر کر دیا گیا۔ پارک لین ریفرنس میں آصف علی زرداری پر جعلی بینک اکاؤنٹس کے ذریعے قومی خزانے کو 3 ارب 77 کروڑ روپے نقصان پہنچانے کا الزام ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >