رکشہ چلانے والے سالہا سال سے بیروگار کیمرہ مین سفیر احمد کی سنی گئی

حالات کی ستم ظریفی سے تنگ آکر نجی چینل سے برطرف کیے جانے والے کیمرہ مین سفیر احمد نے رکشہ چلانا شروع کیا، سفیر احمد کی کہانی راتوں رات سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس کے بعد انہیں اے آر وائی نیوز کے مارننگ شو میں بطور مہمان بلایا گیا، پروگروام میں سفیر احمد کو بطور کیمرہ مین کام کرنے کی پیشکش کی گئی جس سفیر احمد نے کہا کہ وہ اہلخانہ سے مشورہ کرنے کے بعد دوبارہ بطور کیمرہ مین کام کرنے کا فیصلہ کرینگے۔

مارننگ شو میں ہی سفیر احمد کیلئے دو اہم اعلان کئے گئے، میجی پاکستان نے تین سال کیلئے سفیر احمد کے چاروں بچوں کے تعلیمی اخراجات اٹھانے کا اعلان کیا، جبکہ تین سال بعد بھی یہ سلسلہ جاری رہنے کی یقین دہانی کرائی گئی، گورنر سندھ عمران اسماعیل نے سفیر احمد کیلئے ایک لاکھ روپے دینے کا اعلان کیا۔

جس پر سفیر احمد خوشی سے نہال ہوگئے، نجی ٹی وی کے اینکرز کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ میرے پاس الفاظ نہیں ہیں، سفیر احمد نے ان تمام افراد کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اس مشکل وقت میں ان کا ساتھ دیا۔

سفیر احمد نے کا کہنا تھا کہ 20، 25 سال بحیثیت کیمرہ مین کام کیا، ہرمشکل حالات میں اپنی ذمے داری سے پیچھے نہیں ہٹا، طبیعت خراب ہوتے ہوئے بھی نائٹ شفٹ کیا کرتا تھا، پھر بھی چینل سے نکال دیا گیا،نوکری نہ ہونے اور مشکل حالات کے باعث کئی مہینوں تک دال روٹی کھائی، بعض اوقات پانی سے روٹی بھی کھانی پڑی، نوکری سے نکالے جانے کے بعد بہت سے چینل میں درخواست دی لیکن کسی ادارے نے اپنے پاس جگہ نہیں دی۔

کیمرہ مین نے کہا کہ نوکری سے برطرفی کے پانچ سال ہوچکے ہیں، کسی دوسرے چینل میں کام نہ ملنے پر میں نے رکشہ چلانے کا فیصلہ کیا، میری بیٹیاں میرے لیے بڑی نعمت ہیں جو ہمیشہ میرے ساتھ صبر کرتی رہیں۔

دوسری جانب گورنر سندھ عمران اسماعیل نے بھی سفیر احمد سے ملاقات کی ۔ گورنر سندھ نے سفیر احمد کی مالی معاونت کے لیے امدادی چیک دیا جس پر سفیر احمد نے گورنر سندھ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ 4 سال کی بیروزگاری کے باعث رکشہ چلانے پر مجبور ہوئے مالی مدد پر گورنر سندھ کا انتہائی مشکور ہوں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >