بارش کے چند گھنٹے بعد لاہور کی سڑکوں سے پانی غائب

لاہور میں گزشتہ روز شدید بارش لیکن چند ہی گھنٹوں بعد لاہور کی سڑکوں سے پانی اتر گیا اور سڑکیں سوکھ گئیں۔

سوشل میڈیا پر کچھ تصاویر وائرل ہورہی ہیں جو پیپلزپارٹی کے کارکن اور سپورٹرز شئیر کررہے ہیں۔ یہ تصاویر شئیر کرکے یہ دعویٰ کیا جارہا ہے کہ جو حالت کراچی کی ہے وہی لاہور کی ہے، لاہور کی سڑکوں پر بھی پانی کھڑا ہورہا ہے اور علاقے سوئمنگ پول بنے ہوئے ہیں۔

جیو کے صحافی فیضان لاکھانی نے ایک ویڈیو شئیر کی جس میں اس نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ سندھ کے بعد پنجاب کی سڑکیں بھی سوئمنگ پولز بن گئی ہیں۔ یہ فوٹیج فاروق گنج انڈرپاس کی ہے۔

لیکن کچھ ہی گھنٹوں بعد فیضان لاکھانی نے ایک اور ٹویٹ کیا اور اسی فاروق گنج انڈرپاس کی تصاویر شئیر کرتے ہوئے کہا کہ جہاں تنقید کرتے ہیں، وہاں اچھے کام کی تعریف بھی کرنی چاہئے۔ تصاویر میں دکھایا گیا تھا کہ لاہور کے فاروق گنج انڈرپاس سے پانی اتر گیا ہے اور سڑک ٹریفک کی آمدورفت کیلئے موزوں ہے۔

سماء ٹی وی نے لاہور کی صورتحال پر رپورٹ کرتے ہوئے کہا کہ لاہور میں 77 ملی میٹر بارش ہوئی لیکن چند ہی گھنٹوں بعد بارش کا پانی اتر گیا۔ اکثر علاقوں میں حالات معمول پر آگئے۔فاروق گنج انڈرپاس جو سوئمنگ پول کا منظر پیش کررہا تھا، چند ہی گھنٹوں بعد وہاں پانی اترگیا اور ٹریفک کی روانی بحال ہوگئی ہے۔

اس پر سوشل میڈیا صارفین نے کہا کہ تنقید برائے تنقید نہیں ہونی چاہئے بلکہ اچھے کام کی تعریف کرنی چاہئے۔ لاہور میں چند ہی گھنٹوں بعد سڑکوں سے پانی سوکھ گیا، اس پر پنجاب حکومت، ضلعی انتظامیہ کی تعریف کی جانی چاہئے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >