گرفتاریوں کا دور آگیا، نئی لسٹیں تیار ہوگئیں

سینئر صحافی اور تجزیہ کار عامر متین کا کہنا ہے کہ یہ جو تاثر تھا کہ ڈیل ہورہی ہے ایسا کچھ نہیں ہے، گرفتاریوں کا نیا سلسلہ شروع ہونے والا ہے اس کیلئے لسٹیں بھی تیار ہوگئی ہیں۔

عامر متین نے صحافی رؤف کلاسرا کے ساتھ ویڈیو بلاگ میں شیئر کیا کہ نیب نے اپنی آستینیں چڑھالی ہیں، گزشتہ ہفتے ایک اعلی سطح کا اجلاس ہوا جس کا سارا کریڈٹ بھائی لوگوں کو جاتا ہے اور اس اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ دو ماہ کے اندر عدالتوں کی جانب سے احتساب کے عمل کو تیز کیا جائے گا۔

عامر متین نے مزید کہا کہ کمزور تفتیش ، استغاثہ اور اس طرح کے دیگر مسائل کو بھی حل کیا جائے گا اور دو ماہ میں بڑے بڑے برج الٹائے جائیں گے جن میں خصوصا مسلم لیگ ن کےبڑے بڑے نام شامل ہوں گے کسی کو لندن جانے نہیں دیا جائے گا، اس سارے عمل میں شہزاد اکبر کا کردار بہت اہم ہوگیا ہے، اور وہی احتساب کے عمل کے ذمہ دار ہوں گے۔

عامر متین نے انکشاف کیا کہ اس عمل کو کسی سیاسی جماعت تک محدود نہیں رکھا جائے گا کرپشن کسی حکومت کا نہیں ریاست کیلئے مسئلہ ہے، اسی لیے جو ہتھوڑا چلے گا وہ سیاسی وابستگی سے مبرا ہوکر چلے گا۔ رؤف کلاسرا کا اس خبر پر کہنا تھا کہ عمران خان نے ہی خود بزنس کمیونٹی کو یہ یقین دلایا تھا کہ نیب کے اختیارات کو محدود کیا جائے گا اور کاروباری شخصیات پر بنائے جانے والے نیب کیسز کو ختم کیا جائے گا۔

رؤف کلاسرا کا کہنا تھا کہ جب احتساب کے عمل کو خود عمران خان کی حکومت نے سست کیا تھا اس کے بعد اس کو دوبارہ متحرک کرنے کی وجہ ایک ہی ہے وہ ہے 18 ویں ترمیم جس میں صوبوں کو ملنے والے وسائل سے متعلق اسٹیبلشمنٹ کو شدید تحفظات ہیں، اس ترمیم کو واپس کرنے کیلئے عمران خان نیب اور احتساب کے عمل کو زرداری اور نواز شریف کا بازو مروڑنے کیلئے استعمال کیا جائے گا۔

رؤ ف کلاسرا نے مزید کہا کہ آج صوبے این ایف سی ایوارڈ میں اپنا حصہ کم کردیں یہ احتساب کا ٹارزن واپس اپنے بل میں چلا جائے گا، یہ سارا احتساب کا ڈھکوسلا این ایف سی اور 18 ویں ترمیم پر ووٹ ڈلوانے کیلئے ہے بس ، اس پر عامر متین کا کہنا تھا کہ یہ سیاسی احتساب نہیں ہوگا، پارٹی سربراہان پر ہاتھ ڈالا جائے گا، سابقہ وزراءاعلی گرفتار ہوں گے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>