وزیراعظم برطانوی شہریت چھوڑنے کا کہیں تو بغیر سوچے چھوڑ دوں گا، زلفی بخاری

وزیراعظم  برطانوی شہریت چھوڑنے کا کہیں تو بغیر سوچے چھوڑ دوں گا، زلفی بخاری
نیوز ویب سائٹ کو دیئے گئے انٹرویو میں معاون خصوصی برائے اوورسیز پاکستانی زلفی بخاری نے کہا کہ ہمارے آئندہ8 سال پاکستان کے لیے بڑے بہترین ہوں گے، اس سے پہلے ہم کہیں نہیں جا رہے۔

انہوں نے کہا کہ 8 سال کے لیے اپوزیشن کوئی نوکری ڈھونڈ لے اور کام کرے، بہت ہو گیا ملک کو لوٹنا، کچھ اب محنت بھی کرلے۔

دہری شہریت رکھنے والے مشیروں اور معاونین خصوصی پر تنقید کے حوالے سے زلفی بخاری نے کہا کہ ہم پر الزام لگائے جاتے ہیں کہ یہ تو پہلا موقع ملے گا تو بھاگ جائیں گے۔

زلفی بخاری نے کہا کہ میں پاکستان میں ہوں، وہ خود لندن بھاگے ہوئے ہیں، میں پاکستان میں ہوں اور ان کے بچے باہر بھاگے ہوئے ہیں۔ میں پاکستان میں ہوں اور ان کے اقامے نکل رہے ہیں۔

معاون خصوصی نے کہا کہ دہری شہریت کے مسئلے پر خواجہ آصف کی تقریر سے وہ ان کی بات نہیں مان لیں گے بلکہ اس بارے میں فیصلہ باقاعدہ بحث کے بعد ہونا چاہیے۔ خواجہ آصف کو بیرون ملک سے ہر مہینے 20 لاکھ روپے کس بات کے آرہے ہیں۔ ایسا کون سا کام وہ کرتے ہیں جو بتا نہیں سکتے۔

زلفی بخاری نے کہا کہ وہ وزیراعظم کے ساتھ ہیں اورساتھ ہی رہیں گے۔ کسی بھی حیثیت میں پاکستان کی خدمت کر سکتے ہیں اور کریں گے۔ وہ پاکستان ہمیشہ کے لیے آئے ہیں دہری شہریت کے مسئلے پر سپریم کورٹ نے ان کے حق میں واضح فیصلہ دیا ہے۔

سید ذوالفقار علی بخاری نے کہا کہ قانون واضح ہے کہ وزیراعظم کا معاون خصوصی بننے کے لیے دوسرے ملک کی شہریت چھوڑنا ضروری نہیں لیکن پھر بھی اگر کبھی وزیراعظم عمران خان نے انہیں اپنی برطانوی شہریت ترک کرنے کا کہا تو وہ 2 سیکنڈز نہیں لگائیں گے۔

  • Is ko chaye ke ye khud grace dekhaye aur nationality chor de. Mai tu kabhi bhi apne dost ko aisay awkward position mai na dalon jitna isney IK ko dala howa hai. Put your mouth where your money is.

  • Now you gyz are in govt .we give u vote .u should ask to kawagga asif and find out. give us one exmple did u chach one person in curraption…bullshit.only press confrence or on tweet runing govt naver see before.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >