آخر کار ایمیزون اپنی ویب سروسز کے ساتھ پاکستان پہنچ گیا

ایمیزون ڈیٹا سروسز پاکستان پرائیویٹ لمیٹڈ کے نام سے رجسٹریشن کے بعد اب ایمیزون ویب سروسز کی کلاؤڈ کمپیوٹنگ کے لیے ٹیم بنا رہا ہے۔ ایسا کرنے کی ضرورت اس لیے پیش آئی جب ایمیزون کو پاکستان میں اپنا دفتر بنانے کے2 ہفتے بعد ہی پاکستان اور امریکہ کے کچھ حصوں میں سروسز دینے میں مشکلات کا سامنا ہوا۔

ایس ای سی پی کے ریکارڈ کے مطابق پال اینڈریو میکفرسن ایمزون کے پاکستان میں سی ای او کے فرائض نبھا رہے ہیں جبکہ شعیب منیر نامی پاکستانی ایمیزون کے کنٹری ڈائریکٹر کے طور پر کام کر رہے ہیں۔

ایمیزون کے ایک ترجمان نے بتایا کہ اس وقت ایمیزون پاکستان کے لئے عوامی پالیسی کے ماہر کی تلاش میں ہے ، جس میں ایمیزون ویب سروسز کلاؤڈ کمپیوٹنگ کو اپنانے کی ہدایت کی گئی ہے۔ اس کام کے لیے کلاؤڈ کی ریگولیٹری اور سیاسی بندشوں کے خاتمے کے لیے ایسے لوگوں کی ضرورت ہے جو اس کام میں ماہر ہوں۔

چھوٹی مارکیٹس میں داخل ہونے کے دوران یہ ٹیکنالوجی کمپنیوں کے درمیان ایک عام نقطہ نظر ہے ، بائٹینس نے جون میں حسن ارشاد کو عوامی ٹیلی وژن کے سربراہ کی حیثیت سے ٹک ٹاک ایپ پر پابندی روکنے کے لئے عوامی پالیسی کے سربراہ کی حیثیت سے ملازمت دی تھی۔

سٹیٹ بینک پاکستان آئی ٹی گورننس اور مالیاتی اداروں میں رسک منیجمنٹ کے بارے میں فریم ورک اور ویب سروسز کی کلاؤڈ کمپیوٹنگ ٹیکنالوجی کی اجازت اسی شرط پر دیتا ہے کے سروس پرووائڈر مقامی سطح پر اپنے دفاتر اور کلاؤڈ سرور قائم کرے۔

پاکستان کے ای کامرس پالیسی فریم ورک کے مطابق وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی مواصلات پاکستان کی پہلی کلاؤڈ پالیسی تشکیل دینے کے عمل میں ہیں، جبکہ ڈرافٹ ڈیٹا پروٹیکشن ایکٹ مشاورت کے ایک اعلیٰ مرحلے پر ہے۔ یہ فریم ورک ایمیزون سے بھی تعلق رکھتا ہے جو ای کامرس میں ڈیٹا کے تحفظ سے متعلق امور کو حل کرتا ہے۔

ایمیزون ویب سروسز کو پاکستان میں متعلقہ سرکاری محکموں کے ساتھ ملکر کام کرنے کی امید ہے کیونکہ وہ ڈیجیٹل معیشت سے متعلق پالیسیاں تیار کرتے اور اس پر نظر ثانی کرتے ہیں۔ جن میں کلاؤڈ فرسٹ پالیسیاں ، ڈیٹا پروٹیکشن ریگولیشنز ، آؤٹ سورسنگ گائیڈ لائنز ، سائبر سکیورٹی پالیسیاں ، ٹیکس پالیسی اور اعلی قواعد و ضوابط شامل ہیں۔

دیکھئے ایمیزون کام کیسے کرتا ہے


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >