بھارت کے دوست ممالک مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بھارتی سرکار پر دباؤ ڈالیں، آئی سی جی

بھارت کے دوست ممالک مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے دباؤ ڈالیں، آئی سی جی

عالمی تھنک ٹینک آئی سی جی کی مقبوضہ کشمیر سے متعلق جاری رپورٹ نے بھارت کے لیے خطرے کی گھنٹی بجا دی۔

انٹرنیشنل کرائسس گروپ (آئی سی جی) کی جانب سے مقبوضہ کشمیر سے متعلق ایک نئی رپورٹ جاری کی گئی ہے، جس میں آئی سی جی نے بھارت کے اتحادیوں پر زور دیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے مسئلے کو حل کرنے کے لئے بھارت پر دباؤ ڈالے۔

ڈان نیوز کے مطابق آئی سی جی نے بھارت کے اتحادیوں کو زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ریاست کشمیر کی بحالی، نظربند سیاستدانوں کو رہا کرنے اور بھارت کی سکیورٹی فورسز کی جانب سے عام شہریوں کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں کے خاتمے کے لیے بھارت پر دباؤ ڈالیں، اس کے علاوہ جاری رپورٹ میں بھارتی حکومت کو مشورہ دیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر کے سیاسی طبقے سے دوبارہ مذاکرات کرے۔

آئی سی جی کی جانب سے ” کشمیر داؤ پر لگتا جا رہا ہے” کے نام سے جاری کی گئی نئی رپورٹ میں بھارتی حکومت کو خبردار کیا ہے کہ بھارت کی جانب سے اپنائے گئے حالیہ اقدامات نے دو جوہری طاقتوں کو آمنے سامنے لاکر کھڑا کردیا ہے، اور کنٹرول لائن پر ہونے والی سیز فائر معاہدے کی خلاف ورزیاں دونوں ممالک کے درمیان اشتعال انگیزی کے خطرات کو بڑھا رہی ہیں۔

آئی سی جی نے دونوں ممالک پر زور دیا ہے کہ دونوں ممالک 2003 میں باہمی رضامندی کے تحت ہونے والے سیز فائر معاہدے کا احترام کریں، اس کے علاوہ آئی سی جی کشمیر، پاکستان اور بھارت کے درمیان امن کے قیام کے لیے 07-2003 کے دوران اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لینے کی ترغیب دیتی ہے۔

انٹرنیشنل کرائسس گروپ کی جانب سے جاری کی گئی نئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مئی میں دوبارہ منتخب ہونے کے بعد مودی حکومت نے دوطرفہ بات چیت دوبارہ شروع کرنے سے متعلق پاکستان کی پیش کش کو مسترد کر دیا، تاہم گزشتہ سال پانچ اگست کو نئی دہلی نے مقبوضہ کشمیر کو غیر قانونی طور پر بھارت میں ضم کر دیا تھا تب پاکستان بھی اپنی بات چیت کی پیشکش سے دستبردار ہوگیا تھا۔

آئی سی جی نے اپنی رپورٹ میں یہ بھی نوٹ کیا ہے کہ بھارت گزشتہ سال سے مقبوضہ کشمیر میں غیر قانونی اوچھے ہتھکنڈے استعمال کر رہا ہے، جس نے کشمیریوں کے اندر بھارت کے خلاف نفرت بڑھا دی ہے اور بھارت کے ان اقدامات کی وجہ سے پاکستان کے ساتھ دو طرفہ تعلقات میں تناؤ بھی بڑھا ہے۔

رپورٹ میں آئی سی جی نے نوٹ کیا ہے کہ پچھلے سال فروری کے پلوامہ حملے کے پیچھے خودکش بمبار بھی ایک مقامی تھا، جس کا بھارت نے مبینہ طور پر الزام پاکستان پر لگایا جہاں سے پاکستان اور بھارت کے درمیان تناؤ بڑھنا شروع ہوگیا، تاہم اگر عسکریت پسندوں کی جانب سے پلوامہ جیسا ایک اور حملہ ہوگیا تو دونوں ممالک کے درمیان تناؤ مزید بڑھ جائے گا۔

آئی سی جی نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ رواں سال کے شروع میں بھارت کی جانب سے جو نیا ڈومیسائل قانون پاس کیا گیا ہے، جس کے ذریعے مقبوضہ کشمیر میں باہر سے آنے والے ہندوؤں کو رہائشی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں، بھارت کے مذکورہ اقدام کی وجہ سے کشمیریوں میں مزید غم و غصہ پیدا ہو گیا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >