بلی کے بچے سے زیادتی کا واقعہ جھوٹا نکلا، ایف آئی اے نے تصدیق کردی

بلی کے بچے سے زیادتی کا واقعہ جھوٹا نکلا، ایف آئی اے نے تصدیق کردی

وفاقی تحقیقاتی ایجنسی (ایف آئی اے) نے تصدیق کی ہے کہ لاہور میں بلی کے بچے سے زیادتی کا واقعہ جھوٹا ہے۔

ایف آئی اے کے سائبر کرائم ونگ کے اسسٹنٹ ڈائریکٹر آصف اقبال چوہدری کا کہنا تھا کہ یہ سارا واقعہ جھوٹا اور من گھڑت تھا، بلی کے بچے کے ساتھ ریپ یا زیادتی نہیں ہوئی، ڈاکٹر نے بھی اس بات کی تصدیق کی ہے مجھے افسوس ہے کہ کیسے لوگ جھوٹے دعوے کردیتے ہیں”۔

بلی کے بچے سے زیادتی کا معاملہ، ڈراپ سین ہو گیا، سوشل میڈیا پر غیر ذمہ درانہ پوسٹوں سے معاملہ زبان زد ہوگیا

بلی کے بچے سے زیادتی کا معاملہ، ڈراپ سین ہو گیا، سوشل میڈیا پر غیر ذمہ درانہ پوسٹوں سے معاملہ زبان زد ہوگیا

Posted by 24 News HD on Wednesday, August 12, 2020

انہوں نے اپنے ٹویٹر پیغام میں مزید کہا کہ ایسے لوگ معاشرے میں بدامنی کا سبب بننے کے ساتھ ساتھ دنیا میں ملک کی بدنامی کا باعث بھی بنتے ہیں، میری عوام سے اپیل ہے کہ سوشل میڈیا پرایسی خبریں بغیر تصدیق کے شیئر مت کریں اس سے ملک کی بدنامی ہوتی ہے۔

بلی کا میڈیکل چیک اپ کرنے والے ڈاکٹر خلیل محمد نے کہا ہے کہ "مبینہ طور پر بلی کا کیس  میرے پاس ہی آیا تھا بلی کو جو انفیکشن تھا اسے بیماری کے علاج کیلئے میرے پاس لایا گیا تھا اور میں نے اس کا ٹریٹمنٹ کرکے اس کے مالک کے ساتھ اسے روانہ کردیا تھا بعد میں مجھے سوشل میڈیا سے پتا چلا کہ اس بلی کے ساتھ ریپ کا واقعہ رونما ہوگیا ہے، اور بنیاد بنائی گئی کہ ڈاکٹر نے جو ٹیسٹ کیے اس میں ریپ ڈکلیئر ہوا۔

خلیل محمد نے مزید کہا کہ” میں آپ کو حقیقت بتاتا ہوں ہمیں اس بلی کے میڈیکل چیک اپ کے دوران ایسا کوئی ثبوت نہیں ملا، جس سے ایسا کچھ ڈکلیئر کیا جاسکے، بلی رکھنے والے لوگ جانتے ہیں کہ بلیوں کے برتاؤ بہت مختلف ہوتے ہیں اور ان کے ساتھ اس طرح کے کسی فعل کا چانس ہی ناممکن ہے، مجھ پر الزام لگایا گیا کہ میں نے پیسے لے کر پہلے ریپ کا بیان دیا اور اس کے بعد واپس لیا ، تو میں پیسے لے کر ایسی فائنڈنگز دینے والوں پر لعنت بھیجتا ہوں”۔

جانوروں کی دیکھ بھال کرنے والے ایک ادارے کے نمائندے عمر کا کہنا تھا کہ یہاں تو کسی انسان کے ساتھ ریپ کے ثبوت مشکل سے ملتے ہیں ، یہ بلی کا بچہ انفیکشن کا شکار تھا اس کے ساتھ زیادتی کی خبریں بے بنیا د ہیں، پاکستان میں ایسی خبروں کو مزید اچھالا جاتا ہے، لیکن یہ ایک جھوٹی خبر ہے۔

واضح ہو کہ جانوروں کے تحفظ کرنے والے ایک ادارے کی سربراہ عائشہ چندریگر نے دعویٰ کیا تھا کہ لاہور میں ایک بلی کے بچے کے ساتھ ایک نوجوان نے جنسی زیادتی کی جس کے نتیجے میں بلی کا بچہ مر گیا ، شکایت کرنے والی بلی کی مالک عورت نے دعو یٰ کیا کہ ڈاکٹر نے بلی کے ساتھ زیادتی کی تصدیق کی تھی۔

  • FIA ki thqeeq ?main khwab to nhi dekh rhi ,ye tab kehn hoti hy Jan hazron lakeyon ki fake account bna ky blackmail Kia jata hy or Jab FIA main complaint krny jati hain to aik lambi file ki line main us file ko dala jta hy jin ki kbi tahqeq nhi hoti


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >