دماغ تو ٹھیک ہے کے الیکٹرک کا؟کل آدھے کراچی کی بجلی بند کردی،سپریم کورٹ برہم

عدالتی حکم کے باوجود کراچی میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ تھم نہ سکا، جس  پر سپریم کورٹ نے ایک بارپھر برہمی کا اظہار کیا، سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سماعت کے دوران وکیل کے الیکٹرک پر چیف جسٹس برہم ہوگئے،چیف جسٹس گلزار احمد نے کہا پرسوں لوڈشیڈنگ نہ کرنے کا کہا تو کے الیکٹرک نے کل آدھے شہر کی بجلی بند کردی، کیا کے الیکٹرک والوں کا دماغ ٹھیک ہے؟ کراچی رجسٹری میں بجلی کی غیرعلانیہ لوڈشیڈنگ سے متعلق کیس کی سماعت کے دوران  چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ عوام کو ان کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑیں گے۔

یہ کون ہیں بجلی بند کرنے والے، ہم انہیں چھوڑیں گے نہیں، چیف جسٹس

یہ کون ہیں بجلی بند کرنے والے، ہم انہیں چھوڑیں گے نہیں، چیف جسٹس

Posted by 92 News HD Plus on Thursday, August 13, 2020

سپریم کورٹ نے وفاق سے کراچی میں بجلی کا مسئلہ حل کرنے سے متعلق رپورٹ طلب کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت کراچی میں لوڈشیڈنگ کامستقل حل نکالے، چیف جسٹس گلزار احمد کے ریمارکس دیئے کہ کے الیکٹرک ڈیفالٹر کمپنی ہے، اس کا مالک بیرون ملک جیل میں ہے، حکومت کا حال دیکھیں، ایسی کمپنی کو کراچی دیا ہوا ہے، ، کہا پورا ملک ان کو ہی دیدیں، آپ کے سب معاملات گندے ہیں، ان کو اس وقت مسئلہ ہوتا ہے،جب پیسا نکلوایا جائے، ان پر بھاری جرمانہ عائد ہونا چاہیے۔

چیف جسٹس نے کہا آدھا کراچی بجلی سے محروم رہتا ہے،یہ کون ہوتے ہیں بجلی بند کرنے والے؟ وکیل کے الیکٹرک نے وضاحت دی کہ  سربجلی بند نہیں ہوئی تھی،چیئرمین نیپرا نےکہا، اگر ان کےخلاف کارروائی ہوتواسٹے آرڈرلےلیتےہیں،بجلی کی پیداوارسمیت سارےمعاملات خراب ہیں ۔۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے،لوگ مرتےہیں،یہ ہائیکورٹ سےضمانت کرالیتےہیں،ہائیکورٹ بیٹھا ہی اس کام کیلئے ہے،یہ لوگوں کی زندگی کا معاملہ ہے،عوام کو ان کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑیں گے،ان کا باس چاہتاہےکراچی والوں کاپیسہ نچوڑلیں،جس کمپنی کا مالک جیل میں بیٹھاہواس سےکیا امید؟جیل میں انجوائے کرتےہیں، جیب پربات آئےتوجان جاتی،عوام کوبجلی،پانی نہیں ملتا،رہنےکیلئےجگہ نہیں ملتی،ان پربھاری جرمانے لگنے چاہیے۔

کے الیکٹرک کے وکیل نے کہا کہ جیل میں قید شخص کمپنی کا مالک نہیں بلکہ شیٸر ہولڈر ہے، یہ پبلک ہولڈنگ کمپنی ہے، جس کے ڈاٸریکٹر موجود ہیں۔

چیئرمین نیپرا نے مقدمات کا ریکارڈ پیش کرتے ہوئے بتایا کہ کےالیکٹرک نے ہرشوکاز اور کیس پر حکم امتناع لے رکھا ہے،عدالتی معاون فیصل صدیقی نے کہا کہ اگر کے الیکٹرک کو 20 کروڑ جرمانہ کیا جاٸے تو دوسری بار شکایت نہ ہو، ان کو 50لاکھ جرمانہ کیا جاتا ہے جو یہ چند دن میں کما لیتے ہیں۔

چیف جسٹس نے کے الیکٹرک کے وکیل سے مکالمے کے دوران ریمارکس دیئے کہ جس کمپنی نے کے الیکٹرک کو خریدا ہے اس کی جانچ پڑتال کی جائے گی، کمپنی کے وسائل کیا ہیں، تجربہ کیا ہے، کے الیکٹرک کو کس طرح خریدا گیا، سب بتایا جائے، کے الیکٹرک کو آپریٹ کیسے کیا جاتا ہے، تمام تفصیلات سے اسلام آباد آکر ہمیں آگاہ کریں۔

  • CJ nay remarks day ker TV news ke head News banna ha pher faisla K electric kay Haq main dey dena ha. Jessay Saqib Nisar oor Khossa Nawaz shreef kay khelaf remarked detay thaay leken bad main Zamant day de thee.
    CJ sahab yeh Public ha yeh sub janti ha.

  • CJ sahab agr app ko Karachi ke fiker ha tu Sub sey phalay K electric kay stay order foran cancelle kro pher dossri bat hu ge. Mujhay Yaqeen ha yeh kam app nay kerna ne ha. Leken dramay bazi kertay reho gay.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >