جج صاحب!مہربانی کریں،چھوڑ دیں،موٹروے واقعے کے ملزم شفقت کی عدالت میں اپیل

لاہور کی انسداد دہشت گردی کی عدالت میں موٹر وے پر زیادتی کیس میں ملوث ملزم شفقت علی کو گجر پورہ پولیس نے بکتر بند گاڑی میں عدالت میں پیش کیا، عدالت نے ملزم کی فوری شناخت پریڈ کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے 14 روزہ ریمانڈ پر جیل منتقل کردیا۔

انسداد دہشت گردی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے کیس کی سماعت کی، سماعت کے دوران تفتیشی افسر انسپکٹر ذوالفقار نے ملزم کا ریکارڈ عدالت میں پیش کرتے ہوئے کہا کہ ملزم کو 14 روزہ ریمانڈ پر جیل منتقل کیا جائے کیوں کہ ملزم شفقت علی کی شناخت پریڈ کروانی ہے، ملزم شفقت کو پولیس نے منہ پر کپڑا ڈال کر عدالت میں پیش کیا۔

جج نے تفتیشی افسر کی 14 روزہ ریمانڈ کی استدعا منظور کرتے ہوئے ہدایت کی کہ ملزم کی شناخت پریڈ کے لیے خاص انتظامات کیے جائیں، اسے دوسرے ملزموں سے دور رکھا جائے اور خاص خیال رکھا جائے کہ یہ دوسرے ملزموں میں شامل نہ ہو سکے، تفتیشی افسر ملزم کی جلد از جلد شناخت پریڈ کروا کر دوبارہ 29 ستمبر کو عدالت میں پیش کرے۔

انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج ارشد حسین بھٹہ نے ملزم کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ تمہیں کچھ کہنا ہے تو بتاؤ؟ جس پر ملزم نے کہا کہ جی سر مجھے کچھ کہنا ہے، جج کی اجازت پر ملزم نے کہا کہ بس آپ مہربانی کر دیں، جس پر جج نے کہا کہ کس بات کی مہربانی؟ جس پر ملزم نے کہا مجھے چھوڑ دیجیے، ملزم کا جواب سن کر جج نے کہا کہ اگر تم بے قصور ہو تو خود ہی چھوٹ جاؤ گے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >