بہاولپور: پولیس کے روئیے سے دلبرداشتہ زیادتی کا شکار لڑکی نے خودکشی کرلی

جنوبی پنجاب کے شہر بہاولپور میں زیادتی کا شکار لڑکی نے پولیس کی روایتی بے حسی سے دلبرداشتہ ہو کر مبینہ طور پر خود کشی کر لی۔غریب خاندان سے تعلق رکھنے والی محنت کش کی بیٹی طاہرہ کو گزشتہ روز بااثر افراد نے زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔

زیادتی کا شکار لڑکی کے والد نے ایف آئی آر درج کرانے کیلئے تھانے میں اندراج مقدمہ کی تحریری درخواست دی لیکن پولیس نے بااثر افراد ہونے کی وجہ سے ٹال مٹول سے کام لیتی رہی اور متاثرہ خاندان کے پولیس اسٹیشن کے چکر لگواتی رہی

والد کا کہنا ہے کہ پولیس کے روئیے سے تنگ آکر اور ملزمان کے خلاف کارروائی نہ کرنے پر بیٹی نے اسپرے پی کر خودکشی کرلی ہے ۔

لڑکی کے والد کے بقول بیٹی نے خودکشی سے قبل ایک کاغذ بھی چھوڑا، جس میں لکھا گیا تھا کہ ابا! آپ کل سر اٹھا کر جیو گے۔

واقعہ کی اطلاع ملنے پر ڈی پی او نے بااثر خاندان کے خلاف کارروائی نہ کرنے اور جان بوجھ کر متاثرہ خاندان کو پولیس اسٹیشن کے چکر لگوانے پر ڈی پی او نے ایس ایچ او اور تھانہ محررکو حوالات کے پیچھے بھیج دیا۔

اطلاعات کے مطابق ڈی پی او کے حکم پر ڈی پی او کے حکم پر ایف آئی آر درج کرلی گئی، ایف آئی آر کے مطابق گزشتہ شام کھیتوں میں ملزم لقمان نے مبینہ طور پر طاہرہ نامی لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔

ذرائع کے مطابق ملزم لقمان مقامی زمیندار ہے اور اسے خیرپور ٹامیوالی کے ایم این اے اور ایم پی اے کی پشت پناہی حاصل ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >