مسلمانوں کی کورونا سے کم تعداد میں مرنے کی وجہ استنجے کا طریقہ ہے،مشاہد اللہ

اس میں کوئی شک نہیں کہ اللہ تعالیٰ کا شکر ادا کرنا چاہیے اور کرتے ہی رہنا چاہیے، یہی اس کی قدرت ہے اور وہ اس کے لائق بھی ہے۔ جب کوئی وبا آ جائے تو اس پر تکبرانہ بیانات نہیں دینے چاہیئں بلکہ صرف اللہ کا رحم اور عافیت ہی طلب کرنی چاہیے۔ انسان اتنی ترقی کر چکا ہے مگر قدری آفات جیسے کوئی وبا، زلزلہ، آگ، پانی یا ہوا پر کسی کا کوئی اختیار نہیں۔

سینیٹ اجلاس کے دوران جب حکومت نے کورونا پر قابو پانے کیلئے کریڈٹ لینے کی کوشش کی تو مسلم لیگ ن کے سینیٹر مشاہد اللہ نے کورونا کے حوالے سے اپنی منفرد منطق بھی پیش کر دی، انہوں نے کہا کہ اگر دنیا کے دیگر ممالک سے موازنہ کریں تو ہمیں پاکستان میں ہونے والی ہلاکتوں میں ایک واضح فرق نظر آتا ہے۔ اس کی وجہ کسی کی حکمت عملی یا اور کچھ نہیں یہ اللہ کا ہی کرم ہے۔

سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا کہ جن ممالک میں بڑی تعداد میں لوگ اس وبا سے مر رہے ہیں اگر وہاں پر بھی نظر ڈالی جائے تو مسلمانوں کی تعداد بہت کم ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر بھارت میں بھی 84ہزار لوگ ہلاک ہو چکے ہیں تو دیکھنا چاہیے کہ ان میں سے مسلمانوں کی تعداد کتنی ہے۔

آخر میں انہوں نے اپنا تجزیہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان کے نزدیک ہمارے ملک میں کم تعداد میں ہونے والی ہلاکتوں کی وجہ مسلمانوں کا استنجے کا مختلف طریقہ ہے۔ سینیٹر مشاہد اللہ نے کہا کہ چونکہ صفائی نصف ایمان ہے اور پاکستان میں بڑی تعداد میں ایسے لوگ موجود ہیں

جو اپنے جسم کی صفائی ستھرائی کا خاص خیال رکھتے ہیں اور بالخصوص چند ماڈرن لوگوں کو چھوڑ کر بڑی تعداد میں پاکستانی اسی طریقے سے استنجا کرتے ہیں جو اسلام نے بتایا یہی وجہ ہے کہ یہاں کورونا سے کم لوگ مر رہے ہیں اس میں کسی حکومت کا یا جماعت کا کوئی کریڈٹ نہیں یہ اللہ کا کرم اور عطا ہے۔

  • یقینا یہ اللہ کا کرم ہے اور عوام کو اس پر صرف قولی نہیں عملی شکر ادا کرنا چاہیے۔ جس کا مکمل اظہار سیاست، معیشت، عدالت اور معاشرت میں قرآن و حدیث کی پیروی سے ہو گا

    اگرچہ عوام نے مطلوبہ ذمہ داری کا مظاہرہ نہیں کیا۔ حکومتی اقدامات کو سرہانا چاہیے۔ حکومت ٹرمپ جیسا رویہ اپناتی تو صورتحال مختلف بھی ہو سکتی تھی

  • Experience ki bat hai.. yahan Europe main to humain btaya gaya hai keh sans se ya aisi jagah touch karain jahan infected patients ne touch kia ho ya direct unke contact main aaney se corona hota hai… Even WHO ka bhi is tarf dihan nahi gaya keh corona G***d se bhi ghus sakta hai 👏🏼👏🏼👏🏼

  • محترم جناب آپ نے اپنی بیماریوں پہ ھمارے ٹیکس کے پیسوں سے جو خرچہ کیا ھے تو بہتر تو یہ تھا کہ استنجا” ٹرائی کر لیتے۔
    اگر نواز شریف کو بھی زنگی میں ایک دفعہ ٹکا کہ "استنجاء”کرا دیتے توپلٹیں اتنی نہ گرتیں۔
    اب بھی موقعہ ھے حمزہ شہباز اور مریم نواز کو دبا کہ استنجاء کرائیں۔لندن جانے کی ضرورت ھی نہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >