نواز شریف کے اے پی سی سے خطاب کی دعوت قبول کرنے پر ڈاکٹر شہباز گل کا ردعمل

پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا مسلم لیگ (ن) کے قائد نوازشریف سے رابطہ ہوا اور انہوں نے سابق وزیراعظم کو 20 ستمبر کو منعقد ہونے والی اپوزیشن کی ورچوئل اے پی سی میں خطاب کی دعوت بھی دی۔

اس بات کا اعلان چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو نے اپنے ایک ٹویٹ میں کیا کہ نوازشریف کو آل پارٹیز کانفرنس میں ورچوئل شرکت کی دعوت دی ہے۔ پیپلز پارٹی کے ذرائع کا کہنا ہے کہ نوازشریف نے اے پی سی میں ورچوئل شرکت پر رضا مندی ظاہر کردی ہے۔

دوسری جانب رہنما مسلم لیگ ن اور نواز شریف کی صاحبزادی مریم نواز نے والد سے رابطہ کرنے اور خیریت دریافت کرنے پر بلاول بھٹو کا شکریہ اور ان کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے۔

یاد رہے کہ پیپلزپارٹی کی میزبانی میں اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس (اے پی سی) 20 ستمبر کو اسلام آباد میں ہوگی جس میں حکومت کے خلاف لائحہ عمل ترتیب دیا جائے گا۔ اے پی سی میں اپوزیشن کی بڑی جماعتوں کی اعلیٰ قیادت کی شرکت کا امکان ہے۔

اس خبر کے سامنے آنے پر وزیراعظم کے معاون خصوصی برائے پولیٹیکل کمیونیکیشن ڈاکٹر شہباز گل کا کہنا ہے کہ گر مفرور مجرم نواز شریف نے اے پی سی سے خطاب کیا اور ان کا خطاب نشر ہوا تو پیمرا اور دیگر قانونی آپشن استعمال ہوں گے۔ یہ کس طرح ممکن ہے کہ ایک مفرور مجرم سیاسی سرگرمیاں کرے اور بھاشن دے- شریف خاندان جھوٹ کے علاوہ کچھ نہیں بول سکتا۔ اتنے جھوٹے ہیں کہ بیماری پر بھی جھوٹ بولتے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>