وزیراعظم نے اپنی اور صدر کی مراعات کم کرنے کا بل لانے کی منظوری دے دی

وزیراعظم کا ایک اور تاریخی اقدام سامنے آگیا،بطور وزیراعظم اپنی اور صدر پاکستان کی مراعات کم کرنے کا بل لانے کی منظوری دے دی ہے،سرکاری خرچ پر وی آئی پی اخراجات کا کلچر ختم کرنے کیلئے مراعات میں کمی کا قانون فوری پارلیمنٹ سے منظور کروانے کی ہدایت کردی ہے جبکہ قانونی ٹیم نے کام شروع کر دیا ہے۔

بل کے ذریعے سربراہان مملکت کے کئی شہروں میں کیمپ آفسز ڈکلیئر کرنے کی شق کا خاتمہ ہوگا،صدر اور وزیراعظم صرف ایک سرکاری رہائش گاہ رکھ سکیں گے،سکیورٹی،ملازمین، کھانے پینے،انٹرنیٹ اور ٹیلی فون کی مد میں کروڑوں روپے بچائے جائیں گے۔

 

سابقہ ادوار میں صدر اور وزرائے اعظم کی مراعات سے متعلق تہلکہ خیز انکشافات پر مبنی تفصیل وزیراعظم کو پیش کردی گئی ہے،ایک سابق وزیراعظم نے 83 کروڑ روپے صرف گھر کی دیوار پر لگا دئیے،ایک صدر مملکت نے اپنی عزیزہ کا گھر ہی صدر ہاوس ڈکلیئر کر دیا،آبائی علاقوں میں بھی کیمپ آفس قائم کئے گئے۔

رورل سندھ سے تعلق رکھنے والے سابق صدر نے لاڑکانہ ریسٹ ہاؤس اور رتو ڈیرو کا بھٹو ہاؤس بطور صدر ہاؤس ڈکلیئر کیا،جنوبی پنجاب سے ایک وزیراعظم نے ملتان اور لاہور سمیت 5 مقامات پر کیمپ آفسز ڈکلئیر کئے، ایک وزیراعلی نے لاہور میں 7 مختلف کیمپ آفسز کو وزیراعلی آفس ظاہر کیا ہے،عمران خان وزیراعظم اور صدر کی مراعات کم کرنے کا بل لانے والے پہلے وزیراعظم ہونگے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >