ایف بی آر نے سریناعیسیٰ کے ٹیکس معاملے پر حتمی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرا دی

FBR نے سریناعیسیٰ کے ٹیکس معاملے پر حتمی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرا دی

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی اہلیہ سرینا عیسی ٰ کے ٹیکس معاملات سے متعلق حتمی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کروادی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایف بی آر نے سرینا عیسیٰ کے اثاثوں، ٹیکس گوشواروں اور جمع کروائے گئے ٹیکس سے متعلق امور دیکھنے کے بعد یہ حکم جاری کیا تھا کہ سرینا عیسیٰ ساڑھے تین کروڑ روپے کی نادہندہ ہیں اور انہیں یہ ٹیکس ادا کرنے کا نوٹس بھی جاری کردیا گیا تھا۔

ایف بی آر کی جانب سے کمشنر ذوالفقار احمد کی تحریر کردہ اس پورے معاملے کی 250 صفحات پر مشتمل حتمی رپورٹ اور 164 صفحات کا حکم نامہ سپریم کورٹ میں جمع کروادیا گیا ہے، یہ رپورٹ اور حکم نامہ سیل کرکے چیف جسٹس پاکستان کے دفتر میں جمع کروایا گیا۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سرینا عیسیٰ کو 4 مرتبہ شوکاز نوٹسز جاری کیے گئے مگر وہ ایف بی آر کو مطمئن کرنے میں ناکام رہیں، وہ لندن کی جائیدادیں خریدنے، اس کیلئے رقم کی ادائیگی،منتقلی اور شراکت داری کے معاملات پر اپنا موقف بار بار بدلتی رہیں۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ سرینا عیسیٰ کے اثاثوں کی مالیت 10 کروڑ 46 لاکھ روپے بنتی ہے جبکہ ان کی قانونی آمدن 2 کروڑ 30 لاکھ روپے تھی، تاہم ایف بی آر کسی بھی قسم کی کارروائی سے پہلے اس رپورٹ پر سپریم کورٹ کے حکم کا منتظر ہے۔

یاد رہے کہ ایف بی آر کا حکم نامہ موصول ہونے کے بعد سرینا عیسی ٰ کا کہنا تھا کہ وہ اس حکم نامے کو چیلنج کریں گی، کیونکہ یہ حکم نامہ مجھے سنے بغیر پاس کیا گیا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >