آرمی چیف سے ملاقاتوں میں لیڈرشپ کو ریلیف دینے کی درخواست نہیں کی،محمد زبیر

 آرمی چیف سے ملاقاتوں میں لیڈرشپ کو ریلیف دینے کی درخواست نہیں کی،محمد زبیر

مسلم لیگ ن کے رہنما محمد زبیر نے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ سے اگست کے آخر اور 7 ستمبر کو ہونے والی دو ملاقاتوں کی تصدیق کر دی ہے، محمد زبیر کا آرمی چیف سے ملاقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہنا تھا کہ جنرل باجوہ سے میرے طویل مدت سے تعلقات ہیں، اس طرح کی ملاقاتیں سیکرٹ ہوتی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں مسلم لیگ کا نمائندہ ہوں، میں نے آرمی چیف سے کہا کہ میں یہاں کسی کے لئے نہیں آیا، میں یہاں نواز شریف یا پارٹی کے لیے کچھ مانگنے نہیں آیا اور نہ ہی مجھے نواز شریف یا مریم نواز نے آپ سے ملاقاتیں کرنے کا کہا ہے۔ پارٹی کے حوالے سے میری ایک پوزیشن ہے۔

محمد زبیر کا اپنے تصدیقی بیان میں مزید کہنا تھا کہ اللہ کا شکر ہے مجھ پر کوئی کیس نہیں چل رہا، ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے یہ نہیں کہا کہ میں آرمی چیف کے پاس کسی قسم کا کوئی ریلیف مانگنے گیا تھا۔آرمی چیف سے ملاقات میں میں نے انہیں ایک بار بھی نہیں کہا کہ ہاتھ ہلکا رکھیں۔

محمد زبیر نے مزید کہا کہ کہ اگر اتنی زیادہ دیر  بیٹھیں گے تو پارٹی لیڈرشپ سے متعلق بات تو ضرور ہو گی۔ نواز شریف اور مریم نواز کی بات ضرور ہوئی مگر میں نے ریلیف کی درخواست نہیں کی۔

خیال رہے کہ کچھ دیر قبل ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار کی جانب سے یہ کہا گیا تھا کہ مسلم لیگ ن کے نمائندے محمد زبیر نے آرمی چیف سے دو ملاقاتیں کی ہیں اور یہ دونوں ملاقاتیں آرمی چیف نے محمد زبیر کی درخواست پر کی ہیں۔ جس میں آرمی چیف نے ان کو واضح کہا تھا کہ لیگل مسائل عدالتوں اور سیاسی مسائل پارلیمنٹ میں حل ہوں گے، ہمیں ان سب سے دور رکھا جائے۔

  • اب بھی یہ حرامُزادہ کالیا کسی مثلی اور کنجر میراثی کے گناہ کی نشانی جھوٹ بھونک رہا ہے یہ کنفرمُ زحرامُکا نطفہ ہے جھوٹا فراڑیا اب یہ بھونک رہا ہے کہ یہ خنزیت کی نسل سچ کہ رہا ہے اور آئی ایس پر آ ر غلط کیا کنفرمُ کسی لعنتی کی بدکاری کا نتیجہ ہے یہ بدصورتا مکروح غلیظ صورت والا لعنتی بدصورتا

  • نونی لیگ مافیاز گوامنڈیاں خاندان کی یہ تاریخ رہی ھے کہ یہ اپنے محسنوں کی پیٹ میں کام نکلنے کے بعد پیچھے سے خنجر گھونپنے کی تاریخ رہی ھے وزیراعظم جونیجو کی پیٹ میں خنجر گھونپا ضیاء الحق کے مرنے کے بعد فوج کے اداروں میں خنجر گھونپپے اور آج تک گھونپتے آرھے ھیں سپریم کورٹ پر حملہ کروا کر سپریم کورٹ کے چیف جسٹس جسٹس سجاد علی شاہ کو قتل کرنے کی دھمکیاں تین مرتبہ چور دروازے سے وزیراعظم پاکستان بننے کے بعد لوٹ مار کر کے آپنی اولادوں کی جائیدادیں لندن دبئی میں بنانے کے بعد آج پھر فوج اور عوام کا انٹرنیشنل مافیاز کے ہاتھوں میں کھیل کر اپنے ملک کی فوج کے خلاف پروپیگنڈا اور شازیشوں میں مصروف ھے اس بیغرت بیشرم خاندان کو یہ عوام عبرت کا نشان بنا دے گی اور بنا دیا ھے

    • اس کے باوجود ن لیگ اسٹیبلیشمنٹ کی لاڈلی جماعت ہے اور میاں سانپ کو تین بار بھاری دو تہائی اکثریت
      سے نوازا جاتا رہا ہے جب کہ پیپلز پارٹی اور تحریک انصاف کو سادہ اکثریت بھی نہیں دی جاتی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >