شہباز شریف کی شوگر مل نے اچانک ایک ہی دن میں کیوں کسانوں کے واجبات ادا کر دیے

کین کمشنر کی وارننگ، رمضان شوگر مل نے کسانوں کے کروڑوں روپے ادا کردیئے

مسلم لیگ ن کے صدر اور سابق وزیراعلی شہباز شریف کے صاحبزادے سلمان شہباز کی ملکیت رمضان شوگر مل نے کین کمشنر کی وارننگ پر کسانوں کے واجبات ادا کردیئے۔

تفصیلات کے مطابق 21 ستمبر کو کین کمشنر پنجاب نے رمضان شوگر مل کو آخری وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا کہ کسانوں کو گنے کی قیمت کے واجبات تاحال ادا نہیں کیے گئے جس کی متعدد شکایات موصول ہوئی ہیں۔

کین کمشنر کی جانب سے جاری کردہ وارننگ میں کہا گیا کہ2 اپریل 2020 کو شوگر مل کو شو کاز نوٹس جاری کیا گیا تھا جس میں ان سے واجبات کی ادائیگی میں تاخیر کی وجہ پوچھی گئی تھی مگر اس نوٹس پر کوئی جواب نہ آنے پر 16 اپریل کو ایک اور نوٹس جاری کیا گیا۔

کین کمشنر کے مطابق مل کو متعدد بار موقع دیا گیا کہ وہ کسانوں کے واجبات ادا کرے مگر ایسا نہیں کیا گیا جس پر انہیں آخری وارننگ دی جاتی ہے بصورت دیگر مل کے خلاف قانونی کاررائی عمل میں لائی جائے گی اور اس کارروائی میں مل کے تمام مالکان کی گرفتاری بھی عمل میں لائی جاسکتی ہے۔

OFFICE OF

کین کمشنر کی جانب سے 21 ستمبر کو آخری وارننگ جاری ہونے پر رمضان شوگر مل کی جانب سے 22 ستمبر کو 25 کروڑ روپے کے واجبات کسانوں کو ایک ہی دن میں ادا کردیئے گئے اور اس کی تفصیلات کین کمشنر آفس کو ارسال بھی کردی گئی ہیں۔

کین کمشنر کی وارننگ، رمضان شوگر مل نے کسانوں کے کروڑوں روپے ادا کردیئے

کین کمشنر کی وارننگ، رمضان شوگر مل نے کسانوں کے کروڑوں روپے ادا کردیئے

کیا شہباز شریف کی اس رمضان شوگر مل نے اچانک ادائیگیاں پاک فوج کی قیادت کے ساتھ ہونے والی حالیہ ملاقات کی وجہ سے تو نہیں کی ، جو ن لیگ کے رہنما محمد زبیر کی درخواست پر آرمی قیادت سے ملاقات کا انکشاف ہوا ہے جس کو ڈی جی آئی ایس پی آر نے بھی کنفرم کیا ہے !

کیونکہ کہ کین کمشنر پنجاب نے رمضان شوگر مل کو کئی مرتبہ وارننگ جاری کی لیکن اس مل نے کسانوں کے واجبات ادا نہیں کیے تھے اور اب اچانک خبر سامنے آئی کہ شہباز شریف کی رمضان شوگر مل نے کسانوں کو تمام واجبات ادا کر دیے ہیں

دوسری طرف یہ بھی تبصرے کیے جا رہے ہیں کہ آرمی کی قیادت نے شریف خاندان کو کسی قسم کا ریلیف فرہام کرنے سے انکار کر دیا ہے اس لئے ن لیگ دباؤ میں نزار آ رہی ہے اور نواز شریف کی حالیہ تقریر میں بھی پاکستان کے اداروں کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا تھا


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >