موٹروے واقعہ:خاتون نے رات کا سفر شوہر کے دباؤپر کیا،سی سی پی لاہور عمر شیخ

موٹروے واقعہ:خاتون نے رات کا سفر شوہر کے دباؤ پر کیا، سی سی پی او لاہور عمر شیخ

سی سی پی او لاہور عمرشیخ کا قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف میں لاہور، سیالکوٹ موٹروے پر اجتماعی زیادتی کا شکار ہونے والی خاتون کے کیس سے متعلق وضاحت دیتے ہوئے کہنا تھا کہ متاثرہ خاتون پر شوہر کی جانب سے فوری گھر واپس آنے کا دباؤ تھا اور خاتون نے رات کا سفر شوہر کے دباؤ پر ہی کیا۔

قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف میں بریفنگ دیتے ہوئے عمر شیخ نے کہا کہ خاتون کے پیٹرول ختم ہونے کی شکایت پر ایف ڈبلیو او کے ساتھ کانفرنس کال کرائی گئی، خاتون کی جانب سے جب موٹروے ہیلپ لائن 130 پر کال کی گئی تو 45 منٹ تک خاتون کی مدد کے لیے وہاں کوئی نہ پہنچا۔

رات کو دو بجکر 47 منٹ پر کسی راہگیر نے 15 پر کال کر کے اطلاع دی کہ خاتون کے ساتھ کوئی ہاتھا پائی کر رہا ہے، اگر خاتون بروقت 15 پر کال کرکے مدد طلب کر لیتی تو یہ واقعہ پیش نہیں آنا تھا۔

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف میں ایڈیشنل آئی جی پنجاب اورسابق آئی جی شعیب سڈل بھی شریک تھے، چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف ریاض فتیانہ کا کہنا تھا کہ یہ وزارت مواصلات کی ناکامی ہے کہ موٹر وے تو کھول دی گئی لیکن اس پر لوگوں کی حفاظت کے لیے سکیورٹی تعینات نہیں کی گئی، موٹروے کھولنے سے پہلے اس پر سکیورٹی تعینات کرنی چاہیے تھی، موٹروے پر خاتون کے ساتھ زیادتی کے واقعے پر پوری دنیا میں پاکستان کی بدنامی ہوئی ہے۔

قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف میں بریفنگ دیتے ہوئے آئی جی موٹروے کلیم امام کا بتانا تھا کہ موٹروے کا بارہ سو کلومیٹر کا علاقہ ایسا ہے، جہاں پر ہمیں وسائل مہیا نہیں کیے گئے لیکن اس کے باوجود ہم وہاں پر فرائض انجام دے رہے ہیں، موٹروے پر وسائل کی کمی کے حوالے سے وزارت مواصلات اور دیگر اداروں کے نوٹس میں لاتے رہتے ہیں۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >